”اینکرز پارٹی نہ بنیں“، شہباز گل کے ٹویٹ پر کاشف عباسی اور ارشد شریف سیخ پا

مسلم لیگ ن کے رہنماؤں نے ٹی وی پروگرامز میں مرضی کے مہمانوں کو بلانے کی فرمائشیں شروع کردی ہیں جس پر تحریک انصاف کے رہنماؤں نے اپنے نمائندوں کو ان پروگرامز میں نہ بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل نے ٹویٹر پر اپنے پیغامات میں کہا کہ ن لیگ آج کل ٹی وی ٹاک شوز میں ونڈو شاپنگ کرنے کی کوشش کررہی ہے ، اور اینکرز سے کہا جارہا ہے کہ اس تحریک انصاف کے رہنما کے ساتھ پروگرام میں آئیں گے اور اس کے ساتھ نہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ن لیگی رہنما محمد زبیر نے 8 بجے تحریک انصاف کے علی اعوان کے ساتھ پروگرام میں بیٹھنے سے انکار کیا، مزے کی بات یہ ہے کہ پروگرام اینکرز بھی ان کی یہ باتیں مان لیتے ہیں۔

شہباز گل نے کہا کہ ہماری اینکرز سے گزارش ہے کہ آپ پارٹی مت بنیں، ن لیگ سے لاڈ کریں مگر اتنا نہیں کہ ان کی مرضی دوسروں پر مسلط کرنے میں مددگار بنیں، ن لیگ کا حق ہے وہ جسے چاہیں اپنا نمائندہ بنا کر میڈیا پر بھیجیں ایسے ہی ہمارا بھی یہی حق ہے اور ہمیں ڈکٹیٹ نہ کیا جائے۔

شہباز گل کے یہ الزامات نجی ٹی وی چینل کے پروگرام آف دی ریکارڈ سے متعلق تھے، 8 بجے آن ایئر ہونے والے پروگرام میں اینکر پرسن کاشف عباسی اور سینئر صحافی ارشد شریف نے شہباز گل کو آڑے ہاتھوں لیا اور انہیں پروگرام میں بلا کر سخت ردعمل کا اظہار کیا۔

کاشف عباسی نے شہباز گل سے سوال کیا کہ وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری کیوں پروگرامز میں کیوں مرضی کا مہمان نہ ہونے پر اٹھ کر چلے گئے تھے؟

کاشف عباسی اور ارشد شریف نےشدید جذباتی انداز میں حکومتی رکن کی جانب سے عائد کیے گئے الزام ( ن لیگی لاڈ اٹھائیں مگر ان کی مرضی دوسروں پر مسلط کرنے کیلئے مددگار نہ بنیں) کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔

کاشف عباسی نے کہا کہ ہم نے ن لیگی دور حکومت میں 4 سال بائیکاٹ کا بھگتا ہے، آپ بھی کردیں ہمیں کوئی فرق نہیں پڑتا بائیکاٹ سے، لیکن ہم کسی صورت بھی ڈکٹیشن نہیں لیں گے۔

اس پر ارشد شریف نے بھی ان کی تائید کی کہ اگر تحریک انصاف کو بھی اسی طرح طاقت کے نشے نے گھیر لیا ہے جیسے ن لیگ کو ایک وقت میں گھیرا تھا تو آپ بھی یہ بائیکاٹ کا شوق پورا کرکے دیکھ لیں،اس حکومت کے اسکینڈلز دیکھ کر آپ سابقہ حکومتوں کو بھول جائیں گے

  • Inn lifafa anchors ko ahmiyyat deney ki kia zarorat hey …. ye sub lifafey apnry malikoon ke suprt stores mein sales man hain …dukaan kub chaliti hey ? jub gahak atey hein sirf 6 months tamam siastdan inn ki dukaan mein na jaien to inn ke malik in ki salary nahen de saktey kia Arshad Sharif , kia Kashif , sub lifafey bheek mangtey nazar aaien gay … koi talk show na ho private channels per baqi program karein inn anchors ne muzaq banaya huwa hey or jahil MAN MPA inn ka muzaq bantey hein

  • اس حکومت کے اسکینڈلز دیکھ کر…. ارے بھائی کس بات کا انتظار ہے؟ کرو نا اس حکومت کو بھی ایکسپوز! کس نے روکا ہے تمہیں؟ اور کیا یہ بلیک میل کرنے کا طریقہ ہے؟ حد ہو گئی ہے، ہر کسی کی عزت تار تار کرنے والوں کے بارے میں اگر کوئی چھوٹی سی بات کر دے تو ان کے تن بدن میں آگ لگ جاتی ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >