سابق گورنر بلوچستان کی اہلیہ کی جانب سے درج کرائے گئے مقدمے پر حسان نیازی کا ردعمل آ گیا

وزیراعظم عمران خان کے بھانجے بیرسٹر حسان خان نیازی ایڈووکیٹ نے سابق گورنر بلوچستان نواب اکبر بگٹی کی بیوہ نرگس شہزادی کی جانب سے ان کے خلاف درج کرائے گئے مقدمے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ مجھ پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے کہ میں شاہ زوار بگٹی کے خلاف توہین رسالت کا کیس چھوڑ دوں لیکن میں ایسا نہیں کر سکتا، یہی وجہ ہے کہ میرے خلاف جھوٹا مقدمہ درج کروایا گیا ہے۔

ایڈووکیٹ حسان نیازی نے نرگس شہزادی کی جانب سے لاہور کے تھانہ اسلام پورہ میں درج کرائے گئے اس مقدمے میں اپنے اوپر لگنے والے تمام الزامات کی تردید کی اور مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک ٹوئٹ میں بتایا کہ ان پر یہ الزامات اس لیے لگائے گئے ہیں تاکہ وہ شاہ زوار بگٹی کے خلاف توہین رسالت کا کیس واپس لے لیں۔

ایک خبررساں ادارے کو انٹرویو میں حسان نیازی نے کہا کہ میں توہین رسالت کے اس کیس کو خاموشی سے چلا رہا تھا تاکہ لا اینڈ آرڈر کی صورتحال کو برقرار رکھا جا سکے لیکن یہ جھوٹی ایف آئی آر درج کروا کے مجھ پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے، نرگس شہزادی اور ان کے بیٹے شاہ زوار بگٹی کے خلاف توہین رسالت سے متعلق کیس میں آئندہ سماعت پر ان کی ضمانت مسترد ہونے کا امکان ہے، اسی لیے جھوٹی ایف آئی آر درج کرا کے جھوٹے الزامات عائد کیے گئے تاکہ کیس واپس لینے کے لیے دباؤ ڈالا جائے۔

یاد رہے کہ لاہور کے تھانہ اسلام پورہ میں نرگس شہزادی نامی خاتون نے حسان نیازی اور ان کے دیگر4 وکلا ساتھیوں کے خلاف مقدمہ درج کرایا ہے جن میں اقدام قتل، خاتون کے کپڑے پھاڑنے اور ساتھیوں کے ہمراہ حملہ کرنے سمیت دیگر کئی دفعات شامل کی گئیں ہیں۔

اس مقدمے میں متاثرہ خاتون نرگس شہزادی نے ایف آئی آر میں مؤقف اپنایا ہے کہ وہ ایف آئی اے میں اپنے مقدمہ نمبر 104/21 میں عبوری ضمانت کرانے کے لیے اپنے وکیل کے ہمراہ مقامی عدالت میں پہنچیں جہاں وکیل حسان نیازی نے دیگر 4 نامعلوم وکلا کے ہمراہ ان کے مرحوم شوہر اور خود ان کے خلاف غلیظ زبان استعمال کی اور گالیاں بکیں اور حملہ آور ہوئے ان کے وکیل کو بھی ٹائی کی مدد سے گلا گھونٹ کر مارنا چاہا، خاتون نے یہ بھی الزام لگایا کہ حسان نیازی نے اس پر احاطہ عدالت میں تشدد کیا، اسے جان سے مارنے کی دھمکیاں دیں اور اس کے کپڑے پھاڑ ڈالے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>