حنا ربانی کھر کے بھائی کی تعلیمی ادارے میں توڑ پھوڑ،اوورسیز پاکستانی کی فریاد

حنا ربانی کھر کے بھائی کی تعلیمی ادارے میں توڑ پھوڑ،اوورسیز پاکستانی کی فریاد

کینیڈا میں مقیم اوورسیز پاکستانی پروفیسر محمد رضوان خالد نے وزیراعظم سے تحریری طور پر فریاد کی کہ انہوں نے ضلع مظفر گڑھ میں ایک فلاحی تعلیمی ادارہ بنایا جہاں غیر ملکی اساتذہ اور سرمایہ کاروں کو لایا گیا۔ تاہم رہنما پیپلزپارٹی حنا ربانی کھر کے بھائی رکن اسمبلی رضا ربانی کھر نے اپنے غنڈوں کی مدد سے توڑ پھوڑ کروائی۔

یہ خبر فیض اللہ خان نامی ایک صحافی نے شیئر کی جنہوں نے بتایا کہ اس اوورسیز پاکستانی پروفیسر نے اپنے کچھ ساتھی اساتذہ کے ساتھ ملکر مظفر گڑھ میں ایک فلاحی تعلیمی ادارہ بنایا جس کا نام پام ٹری رکھا گیا یہاں پر جنوبی پنجاب اور بلوچستان سے آنے والے طلبا کو بالخصوص اور دیگر علاقوں سے بھی آنے والے طلبا کو بھی سکالرشپس دی جائیں گی۔

اس درخواست میں بتایا گیا کہ یہ ادارہ اب تک 335 یونیورسٹی طلبا کو سکالر شپس دے چکا ہے جبکہ سالانہ 200 طلبا کو فلی فنڈڈ سکالر شپ پر پڑھانے کا پلان بھی موجود ہے۔

وزیراعظم سے براہ راست کی گئی پروفیسر محمد رضوان خالد کی درخواست میں انہوں نے بتایا کہ ان کے ادارے کے سامنے ریلوے کی اراضی لیز پر حاصل کرنے کے لیے درخواست دی گئی جس پر ریلوے نے ابتدائی منظوری بھی دے دی جس کے بعد اس جگہ پر پارک اور سڑک بنانے کا کام شروع کیا گیا سڑک مکمل ہونے پر ایم این اے رضا ربانی کھر نے اپنے 30 غنڈوں کے ساتھ حملہ کیا اور سڑک کو اکھاڑنے کے بعد ادارے کی املاک کو نقصان پہنچایا جس کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی موجود ہے۔

درخواستگزار نے کہا کہ اس نے پولیس اور ایف آئی اے کو مقدمے کیلئے درخواست دی مگر کوئی شنوائی نہیں ہوئی البتہ بااثر ملزموں نے محمد رضوان کے بھائی اور ان کے ایک اور ساتھی پر مقدمہ درج کرا دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ محترم وزیراعظم، آپ فرماتے تھے کہ میری حکومت آئی تو گورے یہاں نوکری کیلئے آئیں گے اور اوورسیز پاکستانی بھی انویسٹمنٹ کریں گے، ہم آپ کی کال پر آگئے، کالج میں دو گورے بھی جاب کیلئے کینیڈا اور امریکہ سے آ رہے ہیں، البتہ حنا ربانی کھر جیسے جاگیر دار اسے روکنا چاہتے ہیں۔

  • It’s nice if this guy open educational institute in Pakistan, but why bringing foreign staff and foreign donor’s? why not local staff? It’s very Suspicious. So many Anti Pakistani NGO’s working in Pakistan.

    • Your statement seems to be condoning the criminals. First of all you have no evidence or facts to suppoprt your suspicion. Secondly, none of the attackers has mentioned any such reason for the attack. Thirdly no one has a right to attack another person or destroy his property based on suspicion. It is a crime that needs to be punished.

  • Prophet Mohammed (PBUH)said if you have to go as far as China for education should go yet so called politicians and their families are refusing education for the poor by destroying establishments offering them better standards of life on their doorsteps.
    Remember your final destination is a grave where not one worldly item will be taken by you except your pious and good deeds.

  • Jb khud ktch krty nahi hain to jealousy ki intaha hai yeh k koi r kyn kr raha us ka naam hona. R yeh bear nahi ho pa raha in s k in k hoty hove kisi r ka naam aye. Jahalat ki intaha hai k yeh nahi daikh rahy woh kaam kia kar raha ? R us kaam s ghraib awam ko kitna faida hona hai? Aisi soch p lanat hai ager aisa e hai jo yeh sab bta rahy hain to.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >