مریم نواز کے دعوے ”فوجی جوان ریڈیو پر میری تقریر سنتے ہیں “ پر دلچسپ تبصرے

مریم نواز کے دعوے "فوجی جوان ریڈیو پر سنتے ہیں ” پر دلچسپ تبصرے۔۔ سوشل میڈیا صارفین نے مریم نواز کے بیان کا مذاق اڑاتے رہے

گزشتہ روز مریم نواز نے فارورڈ کہوٹہ میں جلسہ کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ ایک وردی میں ملبوس فوجی جوان نے میری گاڑی روک کر کہا کہ میں ادھر آجاؤں؟ میں نے کہا کہ آجاؤ بیٹا۔۔

مریم نواز نے مزید کہا کہ وہ فوجی جوان میرے پاس آیا اور کہا کہ میڈم ہم آپکی تقاریر ریڈیو پر سنتے ہیں۔

مریم نواز کے اس بیان کو سوشل میڈیا صارفین نے جھوٹ قرار دیدیا اور مریم کا خوب مذاق اڑاتے ہوئے کہا کہ بہت لمبی چھوڑی نے مریم نواز نے ۔ مریم نواز تب ہی سچ بولتی ہیں جب وہ نہیں بولتیں لیکن جب بولتی ہیں تو جھوٹ ہی بولتی ہیں۔

سوشل میڈیا صارفین کا کہنا تھا کہ ایل او سی کے علاقوں میں تو ریڈیو پاکستان کی سروس ہی نہیں ہے۔ سوشل میڈیا صارفین نے یہ بھی کہا کہ ایف ایم ریڈیوز بھی کوئی سیاسی تقریر نشر نہیں کرتے، وہ تو زیادہ تر انٹرٹینمنٹ پروگرامز نشر کرتے ہیں۔

مریم نواز کے بیان پر ڈاکٹر شہباز گل نے تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ محترمہ ایک بار پھر پکڑی گئیں محترمہ صرف تب سچ بولتی ہیں جب نہیں بولتیں ریڈیو پاکستان پہ تقریر نشر نہیں ہوتی اسکے علاوہ LOCکے علاقے میں جہاں مریم صفدر نے دعویٰ کیا وہاں بھی پاکستان کی کوئی ریڈیو سروس نہیں جو محترمہ کی تقریر نشر کرتی ہو

شہباز گل نے مریم نواز پر طنز کیا کہ یہ کہیں بارڈر کے اس پار تو نہیں نکل گئیں؟

ناشناس نے تبصرہ کیا کہ کیلبری رانی فرماتی ہیں کہ "فوجی نے کہا، میڈم آپ کی تقریر ریڈیو پہ سنتے ہیں”۔ ریڈیو پاکستان تو ان کی تقریر نشر نہیں کرتا۔ FM ریڈیوز بھی سیاسی تقریریں نشر کرتے نہیں۔ تو پھر کون سے ریڈیو سے کیلبری رانی کی تقریر نشر ہوتی ہے فوجیوں کیلئے؟ آل انڈیا ریڈیو؟ جھوٹی رانی کا ایک اور سفید جھوٹ

عمران ڈوگر نے دعویٰ کیا کہ محترمہ ایک بار پھر پکڑی گئیں محترمہ صرف تب سچ بولتی ہیں جب نہیں بولتیں ریڈیو پاکستان پہ تقریر نشر نہیں ہوتی اسکے علاوہ ایل او سی کے علاقے میں جہاں مریم صفدر نے دعویٰ کیا وہاں بھی پاکستان کی کوئی ریڈیو سروس نہیں جو محترمہ کی تقریر نشر کرتی ہو

سمیع یوسف نے عامر لیاقت کی ایک تصویر شئیر کرتے ہوئے تبصرہ کیا کہ مريم نواز کی ريڈيو پر تقرير سننے کے دوران اگلے مورچوں پر موجود فوجی کی حالت

سجاد علی چیمہ نے تبصرہ کیا کہ مریم یہ بھی کہہ دیتی کہ ،ایک فوجی نے مجھے روکا اور کہا میم ہم آپ کی تقریر ریڈیو پر دیکھتے ہیں تو پٹواریوں نے اس پر بھی واہ واہ ہی کرنی تھی

فہد علی نے تبصرہ کیا کہ ایک فوجی نے میری گاڑی روک کر کہا میڈم موبائل رکھنے کی اجازت نہیں ہے لیکن آپ کی تقریر ہم ریڈیو پہ سنتے ہیں, مریم صفدر بڑی بڑی چھوڑنے پہ اسے آسکر ملنا چاہیے ۔

لیاقت نے لکھا کہ عوام کی رہنمائی کیلئے مریم صفدر کی ریڈیو پر تقریر سننے والے فوجی کی تصویر جاری کردی۔

محصف نے لکھا کہ مریم نواز نے حامد میر سلیم،سلیم صافی،ثنا بچہ،ابصار عالم وغیرہ جو اظہار رائے کی آزادی کا رونا روتے رہتے ہیں،ان کے منہ یہ کہہ کر بند کر دیے کے بارڈر پر فوجی جوان بھی ریڈیو پر انکی تقریر سنتے ہیں. جن جلسوں میں یہودی عمران خان کا راگ الاپا جاتا ہے ان جلسوں کی کوریج بھی ہو رہی ہے

محمد شعیب نے بھی عامرلیاقت کی تصویر شئیر کی اور کہا کہ یہ ہے وہ فوجی جوان جس نے مریم صفدر کی گاڑی روکی اور محبت کا اظہار کیا اور بتایا آپکی تقریر ریڈیو پر سنتا ہوں

امجد اعوان نے سوال کیا کہ ریڈیو پاکستان کی کونسی فریکونسی پر کونسے چینل پر مریم کی تقریر لگتی ہے وہ بتا دیں۔

وصی کمبوہ نے تبصرہ کیا کہ پوچھنا صرف یہ تھا کہ ریڈیو پاکستان پر تو مریم کی تقریر نشر بھی نہیں ہوتی- تو پھر جس کو فوجی وردی پہنا کر ریڈیو پر تقریرسننے والی بات کہلوائی گئی، وہ کونسے ملک کے ریڈیو کو سنتا رہا ہے؟

  • گشتی تو گشتی ہوتی ہے گشتی کو جھوٹ یا سچ نہیں اپنی حرام کاری بد کاری سے مطلب ہوتا ہے وہی ہر گشتی کے لئے سچ ہوتا ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >