مریم کے خلاف بیان، علی امین گنڈاپور کی حمایت اور مذمت میں ٹرینڈزٹاپ پر

علی امین گنڈاپور کی حمایت اور مخالفت میں ٹرینڈز۔۔ تحریک انصاف کے حامیوں کا "ہم گنڈاپور کیساتھ کھڑے ہیں ” جبکہ ن لیگ کا ٹرینڈ "گنڈاپور کی گفتار پہ لعنت”

گزشتہ روز آزادکشمیر میں الیکشن مہم کے دوران علی امین گنڈاپور نے سخت زبان استعمال کی۔ علی امین گنڈاپور نے مریم نواز کو ڈاکورانی کہا تھا اور اسکا میک اپ اتارنے کا اعلان کیا تھا۔

علی امین گنڈاپور نے کہا تھا کہ ڈاکو رانی، مریم نواز کہتی ہے کہ جیسا منہ ویسا تھپڑ۔۔میرے پاس ایسی ایسی باتیں ہیں کہ خدا کی قسم اتنے تھپڑ پڑیں گے تمہارے منہ پہ۔۔تم نے ہمارے پیسوں پہ 8 کروڑ کی سرجری کرائی ہے، یہ اتار کر تیرا اصل چہرہ قوم کے سامنے لے آؤں گا۔

اس پر ن لیگ کے کیمپ کی جانب سے گزشتہ رات سخت ردعمل سامنے آیا۔ ن لیگی سپورٹر علی امین گنڈاپور پر لعن طعن کرتے رہے اور کہا کہ علی امین گنڈاپور کو ایک عورت سے متعلق ایسی زبان استعمال کرتے ہوئے شرم کرنی چاہئے۔ دونوں طرف سے حمایت اور مخالفت میں ٹرینڈز چلنا شروع ہوگئے۔

نہ صرف ن لیگی سوشل میڈیا صارفین نے بلکہ بعض صحافیوں نے بھی اس کی مذمت کی جس میں ریما عمر غریدہ فاروقی پیش پیش تھیں۔

ن لیگی سپورٹرز نے مریم نواز سے والہانہ محبت کا اظہار کیا اور علی امین گنڈاپور پر خوب لعن طعن کی اور کہا کہ جس شخص کو آزادکشمیر سے نکل جانے کا حکم دیا گیا وہ بجائے واپس جانے کے ہماری لیڈر کے خلاف بکواس کررہا ہے۔ ایسے شخص کے لئے تو رانا ثناء اللہ، طلال چوہدری اور عابد شیر علی کافی ہیں۔

دوسری جانب تحریک انصاف کے حامی بھی میدان میں آگئے اور ٹرینڈ” ہم علی گنڈاپور کے ساتھ کھڑے ہیں” شروع کیا جو دیکھتے ہی دیکھتے ٹاپ پر پہنچ گیا۔ اس ٹرینڈ میں نہ صرف پی ٹی آئی رہنماؤں عمرایوب خان، شبلی فراز ، علی زیدی نے حصہ لیا بلکہ پی ٹی آئی سپورٹرز بھی علی امین گنڈاپور کے حق میں ٹویٹس کرتے رہے

پی ٹی آئی رہنماؤں اور پی ٹی آئی سپورٹرز کا کہنا تھا کہ ن لیگ کو اسی کی زبان میں جواب دینا چاہئے، جب عابد شیر علی نے گالیاں دیں تو انکے سپورٹرز اور صحافی اسکی حمایت میں آگئے اور اب وہی صحافی اچھل رہے ہیں۔

پی ٹی آئی کے حامیوں کا کہنا تھا کہ اب دوغلاپن ختم ہونا چاہئے، جب طلال چوہدری، عابد شیر علی، رانا ثناء اللہ، مریم نواز گالیاں دیتے ہیں تو ان صحافیوں کو سانپ سونگھ جاتا ہے، ن لیگی سپورٹرز انجوائے کرتے ہیں لیکن جیسے ہی ہم جواب دیتے ہیں تو کہتے ہیں کہ یہ غیراخلاقی ہے، عورت کو گالی دینا ٹھیک ہے اور مذمتیں شروع ہوجاتی ہیں۔

ن لیگ ، پی ٹی آئی اور دیگر جماعتوں کو عوامی ایشوز پر سیاست کرنی چاہئے، ناں کہ گالم گلوچ کی سیاست، ایک دوسرے پر کشمیر فروشی اور غدارے کے فتوے لگانے چاہئیں، گالیاں ن لیگ والے دیں یا تحریک انصاف والے، دونوں ہی قابل مذمت ہیں۔۔ اسلئے صحافیوں کو غیرجانبدار رہ کر جو بھی غلط ہو اسکی مذمت کرنی چاہئے۔ سیاست میں گھر کی عورتوں کو گھسٹینا کسی طور بھی مناسب نہیں۔

  • Maryum Nawaz abuses people, she should be ready to face the reaction!! And by the way did she not got cosmetic surgery ! Why does mentioning her cosmetic surgery creates such uproar in opposition??? I have seen tv channels praising her appearance , she herself adorns herself to make a style statement, so when this style is questioned , face it rather than hiding behind ‘woman card’ !!

  • Ghatya Gundapur ko sack karna chayey, kuch tameez nhi hay iss jeson ko, yeh na na kartay bhi Maryam ko leader bana dayn gay…. wesay koi banda news mayn aaye ya na aaye, yeah aisi harkatayn kar kay unko awam mayn aur mashoor kardetay hayn…

  • نواز شریف کی بے غیرتی اور ملک دشمنی کے بعد صرف وہی ان کو سپورٹ کرے گا جس کی بے شرمی کی وڈیو مریم کے پاس محفوظ ہے ، = ہوشیار رہو !


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >