نور مقدم کے قاتل ظاہر جعفر کی پینٹنگ بنانے والا آرٹسٹ تنقید کی زد میں

سابق سفیر شوکت مقدم کی بیٹی نور مقدم کے قتل میں ملوث ظاہر جعفر کی پینٹنگ بنانے والے آرٹسٹ کو خوفناک انداز میں تصویر پر تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ آرٹسٹ ابدال مفتی نے ظاہر جعفر کی پینٹنگ بنائی تھی، جس میں اس نے ملزم کو سفاکانہ انداز میں دکھایا تھا۔

آرٹسٹ کی جانب سے بنائی گئی تصویر میں ایک شخص کو سفید رنگ کی شلوار اور بنیان میں دکھایا گیا تھا، جس کے کپڑوں اور جسم پر خون کے نشانات تھے اور وہ بستر پر بیٹھ کر مسکرارہا تھا۔ پینٹنگ میں فرش پر بھی خون بکھرا ہوا تھا جب کہ دیوار پر خون سے جملہ لکھا ہوا تھا کہ وہ پاکستانی نہیں امریکی شہری ہے۔

ابدال مفتی نے اس پینٹنگ کو شیئر کرتے ہوئے مختلف سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر لکھا کہ ممکن ہے کہ یہ تصویر لوگوں کو خوفناک محسوس ہو اور وہ بعض افراد کو متاثر بھی کرے، تاہم ان کی جانب سے تیار کی گئی پینٹنگ کا مقصد قاتل کی سفاکیت کو دکھانا تھا۔

ابدال مفتی نے کہا کہ وہ اس قاتل کو روایتی سوٹ بوٹ میں نہیں دکھانا چاہتا کیونکہ اس نے جو کیا وہ ناقابل معافی اور بیہمانہ جرم ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔

آرٹسٹ نے لکھا کہ اس کی جانب سے قاتل کی پینٹنگ کو خون کے ساتھ بنانے کا ایک مقصد یہ بھی تھا کہ خدانخواستہ اگر ہمارا نظام مقتول کو انصاف فراہم نہ کر سکے تو سفاک ظالم کو یاد رکھا جائے۔

اس نے مزید کہا کہ یہ تصویر اس لیے بنائی ہے تاکہ دکھایا جا سکے کہ سماج میں کیسا ظلم اور ایسی کارروائیوں میں ملوث ملزمان کس طرح پر سکون رہتے ہیں اور خواتین کو کس طرح پے در پے قتل کیا جاتا ہے۔

مگر اس پینٹنگ پر کئی لوگ ناخوش دکھائی دیئے اور آرٹسٹ سے مطالبہ کیا کہ وہ اسے ڈیلیٹ کرے، کیونکہ وہ بہت ہی بھیانک ہے۔

  • اس بہتی گنگا میں سب ہاتھ دھونا چاہتے ہیں۔
    کُچھ اپنا یو ٹیوب چینل چمکا رہے ہیں۔
    کُچھ اپنا انسٹا فالوئر بڑھا رہے ہیں۔

    عورتوں پر ظُلم کے واقعات ہم سب کے آس پاس ہو رہے ہیں مگر ہم اپنا منہ دوسری طرف کر لیتے ہیں بلکل اس ہی طرح جس طرح اس جانور کے گھر والوں، محلے والوں اور گھر کے نوکروں نے کیا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >