افغانستان میں امریکا کی پسپائی پر چینی صحافی جو بائیڈن کو ٹرول کرنے لگے

افغانستان میں امریکا کی پسپائی پر چینی صحافی جو بائیڈن کو ٹرول کرنے لگے

افغانستان میں 20 برس تک جنگ لڑنے کے بعد بھی پسپا ہو کر امریکا کے نکلنے پر جہاں امریکا بغلیں بجا رہا ہے اور اس انخلا پر خوش ہو رہا ہے وہیں عالمی امور پر گہری نظر رکھنے والے ماہرین اسے تنقید کا نشانہ بھی بنا رہے ہیں۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے 2020 میں امریکی صدارتی انتخابات جیتنے کے بعد 24 دسمبر کو ٹوئٹ کیا تھا جس میں انہوں نے اپنی جیت کے تناظر میں خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا America is back جس پر تب بھی بڑی تعداد میں لوگوں نے ردعمل کا اظہار کیا تھا۔

تاہم افغانستان میں امریکا کی موجود پسپائی کی صورتحال دیکھتے ہوئے اس پر چینی صحافی نے ٹرول کرتے ہوئے امریکی صدر کو مبارکباد دی اور ان کی آئسکریم تھامے ہوئے ایک تصویر کے ساتھ طالبان کے ایک کارندے کی آئسکریم تھامے تصویر شیئر کی۔

چینی صحافی شین شیوی نے اس تصویر کے کیپشن میں چیئرز لکھا۔ چینی صحافی کے اس جواب پر بیشتر سوشل میڈیا صارفین نے اس کے اس طنز کو سمجھتے ہوئے کہا کہ انہوں نے بڑی شرارت کرتے ہوئے اس ردعمل کا اظہار کیا ہے۔

  • بائڈن نے ایک اور طالبان کارکن نے دو آئیس کریم تھام رکھی ہیں اور مسکراہٹ بھی بائیڈن کی نسبت زیادہ اصلی لگ رہی ہے۔زبردست ٹرول کی ہے واقعی چینی امریکیوں سے بہت آگے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >