اپنے ہی خلاف احتجاج کرنے والی افغان خواتین کو طالبان سیکیورٹی فراہم کرتے رہے

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں مختصر تعداد میں بہادر افغانی خواتین نے اپنے حقوق کیلئے طالبان کے خلاف احتجاج کیا جبکہ طالبان ان خواتین کو سیکیورٹی فراہم کرتے رہے۔ احتجاجی خواتین کا مطالبہ تھا کہ عورتوں کو بھی سیاسی اور بنیادی حقوق فراہم کیے جائیں۔

تفصیلات کے مطابق کابل میں طالبان کے خلاف احتجاج کرنے والی خواتین نے برقعے پہن کر حجاب کر رکھے تھے جبکہ انکے چہرے نظر آ رہے تھے۔ احتجاجی خواتین طالبان کے خلاف اپنے حقوق کے لیے پلے کارڈز اٹھائے احتجاج کر رہی تھیں جبکہ طالبان جنگجو بھی وہیں موجود تھے جو ان خواتین کی حفاظت پر مامور تھے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایرانی صحافی مسیح علی نجاد نے ویڈیو شیئر کی اور لکھا کہ بہادر افغان خواتین طالبان کے خلاف اپنے حقوق کیلئے احتجاج کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کا عام مطالبہ ہے کہ انہیں ان کے بنیادی حقوق فراہم کیے جائیں۔ کام کرنے دیا جائے، تعلیم حاصل کرنے دی جائے اور سیاسی معاملات میں بھی ان کو نمائندگی دی جائے۔

ایرانی صحافی نےامید ظاہر کی کہ اپنے حقوق کے لیے مزید افغان خواتین اور لوگ بھی ان کا ساتھ دیں گے۔

یاد رہے کہ امریکا نے طالبان نے مطالبہ کیا تھا کہ اگر وہ چاہتے ہیں کہ واشنگٹن افغانستان پر ان کی حکومت کو تسلیم کرے تو پھر انہیں اپنے ملک میں رہنے والی خواتین اور بچیوں کے حقوق کا احترام کرنا ہو گا اور ان کے بنیادی حقوق کی فراہمی کو یقینی بنانا ہوگا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >