مینار پاکستان واقعہ: اقرارالحسن تنقید کی زد میں کیوں آگئے؟

لاہور میں یوم آزادی 14 اگست والے روز گریٹر اقبال پارک میں ایک واقعہ پیش آیا جس میں منچلوں نے ایک خاتون سے بدتمیزی کی،کپڑے پھاڑ ڈالے اور اسے ہوا میں اچھالتے رہے۔

عائشہ اکرام نامی ٹک ٹاکر اپنے دو ساتھیوں عامر سہیل اور صدام حسین کے ہمراہ وہاں پہنچیں اور ویڈیوز بنانا شروع کر دیں۔اچانک منچلوں کے ایک گروہ نے خاتون پر ہلہ بول دیا، کپڑے پھاڑے اور انہیں ہوا میں اچھالتے رہے، خاتون دہائی دیتی رہی لیکن کسی نے نہ سنی۔خاتون نے بڑی مشکل سے جان چھڑائی۔

فوٹیج وائرل ہو نے پر پولیس نے 400 افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ملزمان کی فوری گرفتاری کا حکم دے دیا ہے۔ ملزمان کی نادرا کی مدد سے تصدیق کی جارہی ہے۔

اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں اقرارالحسن نےمتاثرہ لڑکی کی تصویر شئیر کرتے ہوئے لکھا کہ مینارِِ پاکستان پر بھیڑیوں کا شکار عائشہ کے پاس رات کے اس پہر اسے صرف یہ احساس دلانے پہنچا ہوں کہ اُس نے جنسی حیوانوں کو خلاف ایف آئی آر کروا کر جس بہادری کا ثبوت دیا ہے اس پر اُسے سلام ہے۔۔۔ مجھے اس جملے پر معاف کیجئے گا لیکن خوش قسمت ہیں وہ جنہیں اس ملک میں خدا نے بیٹی نہیں دی۔

میڈیا پر متاثرہ ٹک ٹاک سٹار عائشہ اکرام کی کوئی تصویر سامنے نہ آئی لیکن اقرارالحسن نے عائشہ اکرام کی تصویر شئیر کردی جس پر وہ تنقید کی زد میں آگئے۔ سوشل میڈیا صارفین کا کہنا تھا کہ قرارالحسن کو ٹک ٹاک سٹار کی تصویر اور معلومات سامنے نہیں لانی چائے تھیں۔

سوشل میڈیا صارفین نے اقرار کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ پہلے ہی لڑکی پر بہت ظلم ہوا ہے اور یہ گِدھ گوشت نوچنے پہنچ گئے ہیں۔اقرارالحسن اپنے ایک اور جملے "خوش قسمت ہیں وہ جنہیں اس ملک میں خدا نے بیٹی نہیں دی "پر بھی تنقید کی زد میں آئے۔سوشل میڈیا صارفین نے کہا کہ بیٹیاں اللہ کی رحمت ہیں، ہم خوش قسمت ہیں کہ اللہ نے ہمارے گھر رحمت نازل کی ہے۔

سوشل میڈیا صارفین نے اقرارالحسن کو ریٹنگ کا بھوکا، ڈرامے باز، ملکہ جذبات کا بھی خطاب دیا اور کہا کہ اقرارالحسن جذباتی ہونے کی ایکٹنگ کرتا ہے، حقیقت میں یہ ایک گِدھ ہے جو ریٹنگ کیلئے گوشت نوچنے پہنچا ہے۔

چوہدری نوید نے تبصرہ کیا کہ میری پاک دھرتی پر ایک اور نوسرباز۔۔یہ گدھ ہیں گوشت نوچنے پہنچ جاتے ہیں۔۔۔

سلطان سالارزئی نے سوال کیا کہ بھیڑیوں نے شکار کیا، گدھ لاشہ نوچنے پہنچ گئے! تصویر کیوں ضروری تھی؟

رمیز ستی نے جواب دیا کہ میں اس واقعے کی مذمت کرتا ہوں لیکن آپ نے یہ انتہائی بات غلط کی ہےکہ ”خوش نصیب ہیں وہ لوگ جنہیں اللہ نے اس ملک میں بیٹی نہیں دی“ کیا پاکستان میں خواتین & لڑکیوں کو عزت نہیں ملتی؟ کیا پاکستان میں ہر خاتون اور ہر لڑکی کے ساتھ زیادتی ہوتی ہے؟ کیا پاکستان میں سب مرد ایک جیسے ہیں؟

ایک سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ بیٹیاں نہ ہونا خوش قسمتی ہے ۔یا ایسی بیٹیاں نہ ہونا ؟؟ بہت معذرت کے ساتھ جتنی تکلیف آپکو اسکی ہے مجھے اس سے بھی زیادہ ہے کیونکہ میری ہم جنس ہے وہ ۔لیکن میں اس ماں کی طرح نہیں سوچتی جو ہر غلط کام میں اپنے بچے کا ساتھ دے ۔نصیحت ہی کروں گی کہ باز آجائیں سب ٹک ٹاکرز۔

مدثر اقبال کا کہنا تھا کہ ہر کوئی ہوس کا شکار ہے اور کوئی نہ کوئی اسکا نشانہ بن رہا ہے مینارِ پاکستان پہ یہ خاتون حیوانوں کی ہوس کا نشانہ بنی اور یہاں ریٹنگ کی ہوس میں قرارالحسن کا نشانہ بنیں۔ تین دن عزت کی خاطر خاموش رہنے والی خاتون کو صرف ریٹنگ کی ہوس میں سب کے سامنے لا بٹھایا۔ دلیل کہ لڑکی کی رضامند ہے

ایک خاتون کا کہنا تھا کہ مجھے اس واقعے کے بارے میں کچھ نہیں کہنا لیکن اقرار الحسن صاحب کے بارے میں کہنا ہے۔۔۔۔۔کیا ڈرامے باز بندہ ہے ۔۔اللّٰہ بچائے

اقرارالحسن کی وضاحت

سوشل میڈیا صارفین کے ردعمل پر اقرارالحسن کا کہنا تھا کہ اجتماعی زیادتی کا شکار مختاراں مائی کی تصویر فخر سے لگاتے ہیں، دہشت گردی کی وکٹم ملالہ کی تصویر بھی کبھی کسی نے نہیں چھپائی، چھریوں کے وار سہنے والی خدیجہ بھی ان سب کے ٹوئیٹر اکاؤنٹس پر دکھائی دیتی ہیں، بس درندوں کی دست درازی کا شکار، غریب کی بیٹی عائشہ نظر نہیں آنی چاہئیے۔ واہ !

ایک سوشل میدیا صارف نے تصویر شئیر کرنے پر تنقید کی تو اقرارالحسن نے جواب دیا کہ یہ اس کی چوائس ہے بہنا ۔۔۔ وہ بہادری سے اس کا سامنا کرنا چاہتی ہے اور ان لڑکیوں کی آواز بننا چاہتی ہے جو ان وحشیانہ حرکتوں کا سامنا کرتی ہیں اور پھر اپنے اوپر مظالم کو "عزت” جانے کے خوف سے چھپاتی ہیں۔

اپنے ایک اور ٹوئٹر پیغام میں اقرارالحسن کا کہنا تھا کہ اس روایت کو بدلنا ہو گا کہ سرِ راہ لڑکی پر کوئی آوازہ کسے، دست درازی کرے اور وہ اپنے خاندان کی عزت کے نام پر اسے جواب بھی نہ دے۔ عائشہ نے سامنے آ کر، مقدمہ درج کروا کر دنیا کے سامنے اپنا اور پاکستان کی ہر لڑکی کا مقدمہ لڑنے کا فیصلہ کیا ہے، آپ اسے سپورٹ نہیں کرسکتے تو خاموش رہئیے

  • سب ریٹنگ اور فولو نگ کی جنگ ھے
    اس پارسا عورت کی اور بھی کئی ویڈیو ہیں
    یو ٹیوب پر . اس نے بھی سب کچھ ٹک ٹاک
    کے لئے کیا اور اقرار اور شامی نے بھی
    سب دیکھتے جائیں اور ان کے پیسے بنتے جائیں
    سب کچھ ایک گورکھ دھندہ ہے

  • Ye Haramkhor iqrar ul Hassan khud gandi pics share kerta raha hai apni. Beghairat k bachey, is k saath ghalt hua but is larhki ney khud message ker k apney fans ko bulwaya tha aur us k saath videos banaey ka waada kya tha.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >