رضامندی: ماریہ میمن کے بیان پر نئی بحث چھڑگئی

ماریہ میمن نے گزشتہ روز نجی چینل کے پروگرام میں نئی بحث چھوڑدی

کاشف عباسی کے شو میں اینکر ماریہ میمن نے گفتگو کوتے ہوئے کہا کہ ایک بحث شروع کریں جب خواتین پریشان ہوتی ہیں، ایسی کیا وجہ ہے کہ وہ اپ سیٹ ہوتی ہیں۔ ہم میں سے ہر ایک کیساتھ کبھی نہ کبھی زندگی میں ایسا واقعہ انکے ساتھ ہوا ہے، ہوتے ہوتے رہ گیا ہے یا ہوسکتا تھا۔

ماریہ میمن کا مزید کہنا تھا کہ آخرایسی کیا وجہ ہے کہ آدمیوں پر ایک دم لیبل لگ جاتا ہے، آپ نے اپنے بیٹوں کو بتانا ہے کہ یہ خاتون ہے، یہ آپکی جاگیر نہیں ہے، یہ آپکے ساتھ کام بھی کرے گی، یونیورسٹی بھی جائے گی، اسکو آپ نے سپیس دینی ہے۔

ماریہ میمن کا مزید کہنا تھا کہ اپنی اولاد خاص طور پر بیٹوں کو consent کا مطلب سمجھائیے، اگر وہ نو (No) بولے گی تو اسکا مطلب ہے نو۔یہ ذہن سازی ہے۔

سوشل میڈیا صارفین نے ماریہ میمن کے استعمال کئے گئے لفظ consent پر سخت ردعمل دیا ، ان کا کہنا تھا کہ اس لفظ کا مطلب رضامندی ہے۔سوشل میڈیا صارفین کی دلیل تھی کہ consent اسلام میں اسکوزنابالرضاکہاجاتا ہے۔اسلام میں بالرضااوربالجبردونوں ممنوع ہیں۔اسکےمقابل واحدحل نکاح بتایاگیاہے۔

سوشل میڈیا صارفین کے مطابق اسلام نے ریپ، زیادتی سے جہاں منع کیا ہے، وہاں زنابالرضا سے بھی منع کیا ہے۔ یورپ میں یہ لفظ عام ہے کہ ایک جوڑا رضامندی سے بغیر شادی کئے جو چاہے کرسکتا ہے۔

سلطان سالارزئی نے دعویٰ کیا کہ یہ Consentوالی فکرلبرل طبقےنےمغرب سےمستعارلی ہے۔مغرب میںRapeکےمقابلےمیںconsentکےمقدمات ہوتے۔حاصل مدعہ یہ ہوتاکہ جوڑےمیں باہم رضامندی ہوتوجوچاہیں کریں۔اسلام میں اسکوزنابالرضاکہاجاتا۔اسلام میں بالرضااوربالجبردونوں ممنوع ہیں۔اسکےمقابل واحدحل نکاح بتایاگیاہے۔

مزید اس کا کہنا تھا کہ چنددوست دلیل دےرہےکہ دولوگوں کےآپسی معاملات میں تیسرےکاکام نہیں۔بالکل مان لیتےہیں۔اللہ جانےوہ جانیں۔لیکن جبconsentکی ترویج پرائم ٹائم ٹیلیوژن پہ کی جارہی ہوتویہ زاتی معاملہ اجتماعی اورمعاشرتی ناسوربننےکاخطرہ ہوتاہے۔پھربتانالازم ہوجاتاہےکہ بالجبروبالرضانہیں نکاح سکھائیں۔

ملیحہ ہاشمی کا کہنا تھا کہ ہر شخص گنہگار ہے لیکن خدارا نئی نسل کو حلال حرام کی تمیز نہ بھلائیے مرضی سے زنا بھی زنا ہی ہے۔ وہ کوئی نیک کام نہیں بن جاتا اگر عورت رضامند ہو۔ کتنی ہی خواتین آج career کی دوڑ میں اس علت کا شکار ہو چکیں اور جب بھانڈا پھوٹےتو Harassment کا شور۔ عورت مارچ نئی نسل تباہ کرنےکے درپے۔

فاخر رضوی کا کہنا تھا کہ اس لفظ کا مطلب رضا مندی… زنا تو زنا ہوتا ہے بیشک رضامندی سے کیا جائے. اے آر وائے والوں کو کیا ہو گیا ہے پہلے ارشد شریف کی بدمعاشی، پھر اقرار کا ڈرامہ اب ماریہ میمن کی چول۔

فہد علی کا کہنا تھا کہ ماریہ میمن نے اپنے شو میں ایک نیا لفظ چھوڑا ہے Consent اور کہا ہے والدین کو اپنے بچوں کو یہ سکھانا چاہیے مت بھولیے گا اس کا مطلب میرا جسم میری مرضی سے بالکل الگ نہیں ہے۔

چوہدری حمزہ نے سوال کیا کہ راستہ ہم نے چننا ہے!! اللہ کا راستہ یا وہ جو ماریہ میمن اور ریما عمر بتا رہی ہے!!

عابد لودھی کا کہنا تھا کہ مطلب والدین اپنے بچوں سے سیکس کے متعلق بات چیت کریں اور اگر اپنی مرضی سے زنا کریں تو کوئی مسلہ نہیں مگر زور زبردستی سے اگر کوئی کرے تو رولا ڈال دیں۔

  • yar jahan dil karta hay Islam daal detay ho, aik baat batao k kiya consent say sex karna bether hay ya jo pakistan mayn zabardasti rape horehay hayn, mob violence horaha hay wo behter hay? Sex insan ki basic zaroorat hay , aisay hi jesay roti pani, hawa aur agr isko easy nahi karogay tou society mayn sexual crime or frustration berthi rehay gi. Short time Nikah (like muttah, misyar) can be one solution but that should be made easy, larka, larki apas mayn misyar ya muttah karlayn and that should be enough for their relationship, dont insert molvi/megistrate in it.

  • اس میں ماریہ میمن صاحبہ کا قصور نہیں، کچھ عرصہ سے اے آر وائی کی پالیسیوں میں خاصی شفٹ نظر آتی ھے۔ کیو ٹی وی کی وجہ
    سے عروج حاصل کرنے والا اے آر وائی گروپ اور دوسرے ان چینلز میں کوئی فرق نظر نہیں آتا، جہاں نہ مذہب کا خیال کیا جاتا ھے اور نہ اپنی اسلامی اور اخلاقی قدروں کا۔ یہاں بھی ویوورشپ کی دوڑ ھے، دنیا کو دکھانا ھے کہ ہم کتنے جدت پسند ہیں، اگر ایسی بات نہ ھوتی تو پھر ہمارے چینلز پر ایسے اشتہارات، ڈرامےاورفلمیں نہ چل رھی ھوتیں جو پچھلے کچھ عرصہ سے دکھائے جا رھے ہیں، حالیہ واقعات پر رپورٹنگ اور تبصرے منافقت کی انتہا ہیں!


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >