پاکستان کرکٹ کیلئے محفوظ،سکیورٹی تو ساری دنیا کا مسئلہ ہے:کمار سنگا کارا

2009 کے متاثرہ کھلاڑی بھی پاکستان آنا چاہتے ہیں: کپتان ایم سی سی کمار سنگا کارا

 سری لنکا کے سابق کھلاڑی اور ایم سی سی کے کپتان کمار سنگا کارا کا کہنا ہے کہ پاکستان میں کرکٹ کی واپسی اور سری لنکن ٹیم کا آنا خوش آئند ہے۔ پاکستان کے لوگ اور یہاں کے کھانے ہمیشہ اچھے لگے اسی وجہ سے یہاں آنا باعث مسرت ہے اور خاص طور پر 2009 کے واقعے سے متاثر کھلاڑی بھی یہاں آنے کی خواہش رکھتے ہیں۔

یاد رہے کہ 3 مارچ 2009 میں قدافی اسٹیڈیم سے کچھ فاصلے پرسری لنکن ٹیم کی بس جو کھلاڑیوں کو قذافی اسٹیڈیم لے کر جا رہی تھی پر دہشتگردوں نے حملہ کیا تھا جس میں سری لنکن ٹیم کے7 کھلاڑی زخمی جبکہ 6سکیورٹی اہلکار جاں بحق ہوئے تھے۔یہ تاریخ کا وہ سیاہ واقعہ تھا جس نے پاکستان میں کرکٹ کے مستقبل کو کئی سال پیچھے دھکیل دیا ۔

سنگاکارا نے پاکستان کرکٹ بورڈ کا شکریہ ادا کیا اور 10سال بعد پاکستان آنے پر خوشی کا اظہار کیا ایم سی سی کے کپتان کا کہنا تھا کہ ٹیم یہاں آ چکی ہے اور تمام انتظامات مکمل ہو چکے ہیں اور ان کا کہنا تھا کہ میری ذاتی طور پر پاکستان میں خاص طور پر لاہور میں کھیلنے کے حوالے سے بہت اچھی یادیں وابستہ ہیں.

لنکن کرکٹرکا 2002 میں پہلی بارپاکستان آنا ہوا تھا، جب ان کا سامنا وقار یونس اور شعیب اختر , شعیب ملک ،وسیم اکرم جیسے کھلاڑیوں سے  ہوا تھا۔ آخر میں ایم سی سی کپتان نے اپنی تیاریوں کے بارےمیں بتایا اور شائقین کو یہ یقین دلایا کہ لاہور پاکستان میں ایک بہت شاندار مقابلہ ہونے جا رہا ہے اور اپنی ٹیم کے جیتنے کی خواہش بھی ظاہر کی ہے،اور ساتھ اس بات کو بھی تسلیم کیا کہ ہمارے سامنے بہت ہی ٹف اپوزیشن ہو گی جس سے ہمیں مقابلہ کرنا ہے۔

واضح رہے کہ مارلی بون کرکٹ ٹیم (ایم سی سی) 48 سال بعد اور کمار سنگاکارا 10 سال بعد پاکستان آئے ہیں، اس کے علاوہ اگر کرکٹ میچز کے شیڈول کی بات کی جائے توایم سی سی کی ٹیم  14 فروری کو لاہور قلندرسے ، 16 فروری کو پاکستان شاہین کے ساتھ میچ کھیلے گی جبکہ 17 فروری کو ناردرن اور 19 فروری کو ملتان سلطاننز کے ساتھ میچ کھیلے گی۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More