"دیکھنا میرے منہ پر پھٹکار تو نہیں پڑی”عاقب جاوید سابق کپتان رمیز راجہ کا جملہ آج بھی نہ بھول سکے

تفصیلات کے مطابق سابق قومی پیسر عاقب جاوید کو میچ فکسنگ سکینڈل کیس کی تحقیقات کے لیے جسٹس قیوم کی سربراہی میں بنائے گئے کمیشن کے سامنے پیشی سے قبل سابق قومی کپتان رمیز راجہ کا کہا جملہ "دیکھنا میرے منہ پر پھٹکار تو نہیں پڑی” آج بھی یاد ہے۔ جبکہ سابق پیسر کے مطابق انہیں اس سوال کا جواب عدالت کے اندر پیشی کے موقع پر ملا ۔

سابق قومی پیسر عاقب جاوید کا میچ فکسنگ سکینڈل کی پیشی کا احوال بتاتے ہوئے کہنا تھا کہ جب میں میچ فکسنگ سکینڈل میں گواہی دینے کے لئے عدالت میں پہنچا تو مجھ سے پہلے سابق کپتان رمیز راجہ کی گواہی تھی۔عدالت سے باہر آتے ہوئے سابق کپتان نے مجھے پوچھا دیکھنا میرے منہ پر کہیں پھٹکار تو نہیں پڑی؟ میں سوال کا جواب انہیں نہیں دے سکا اور مذاق میں بات کو ٹال کر اندر چلا گیا۔

انہوں نے کہا کہ جب میں عدالت میں اپنا بیان ریکارڈ کروانے کے لیے کمیشن کے سامنے پیش ہوا تو انہوں نے مجھ سے قرآن پاک پر ہاتھ رکھو آکر یہ عہد لیا کہ ” میں اس مقدس کتاب پر ہاتھ رکھ کر عہد کرتا ہوں کہ اس کے سے متعلق جو بھی حقائق اور سچ ہوگا  نہیں چھپاؤں گا اگر میں جھوٹ بولوں تو میرے منہ پر پھٹکار پڑے” انہوں نے کہا کہ جب مجھ سے یہ عہد لیا گیا تو مجھے سمجھ میں آیا کہ رمیزراجہ نے مجھ سے وہ سوال کیوں کیا تھا؟

سابق پیسر نے اپنی گفتگو میں کہا کہ میچ فکسنگ سکینڈل میں گواہی دیتے ہوئے ابھی مجھے صرف دو منٹ ہی گزرے تھے کہ جج صاحب نے مجھے وہیں روکتے ہوئے کہا کہ اب آپ کی گواہی بند کمرے میں ہو گی، جہاں کرکٹرز کے وکیل صفائی کے علاوہ جسٹس قیوم موجود تھے۔ انہوں نے کہا کہ میرے وہاں پر سب کچھ سچ بتا دینے کی وجہ سے سب لوگوں نے اخذ کیا کہ میں دوسرے کرکٹرز کو پھنسا کر خود کھیلنا چاہتا ہوں جبکہ ایسا بالکل بھی نہیں تھا۔

عاقب جاوید کا خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ آجکل جو نوے کی دہائی کا شور سامنے آرہا ہے اسے اب ختم ہونا چاہیے۔انہوں نے واضح کیا کہ پی سی بی کہ بورڈ میں موجود لوگ اپنی نوکری بچانے کے لیے نہیں بول رہے۔

عاقب جاوید نے اس سوال پر کہ آپ نے کمیشن کے سامنے پیش ہوکر کیا تفصیلات بتائی تھیں؟ کے جواب میں کہنا تھا کہ میں نے پیسوں سے لے کر پجارو گاڑی لینے تک کی تمام تفصیلات کمیشن کے سامنے رکھ دی تھیں۔

  • نہیں رمیز مجھے تو آپکے منہ پر کوئی نئی پھٹکار نظر نہیں آ رہی؟

    کیونکہ آپکا منہ تو بہت عرصے سے ایسا ہی ہے ؟    ہاہاہا 

  • It is good that all of this is coming out. Rameez has recently been an advocate of banning match fixer for lifetime but that he himself was a culprit in his playing days, places himself in that list of players who should have been banned for life. Actually all these players of the past were doing what Wasim Akram asked them to do. They all sold the country for few bucks and made it sure that Pakistan never win against India in a world cup match. Curse them all whenever you see them.

  • رمیز راجہ وہ حرامی ہے جس نے انجری میں "محمد زاہد” کو کھیلا کر اُسکی کمر توڑ دی۔

     

    اُس کے بعد محمد زاہد کبھی بھی پاکستان کے لیے نہ کھیل سکا۔

  • وسیم اکرم بہت بڑا جواری اور بددیانت نکلا۔

    جس طرح کا سلوک اس نے عاقب جاوید سے کیا۔ بےشرمی کی حد دیکھو وسیم صاحب ابھی تک شرمندہ تک نہیں۔

  • so its mean Ramiz was the part of match fixer gangs in Past thay’s why he asked Aqib there is any sign of phutkar on my face cos there was a guilt on his face cos he lied to the committee

  • رمیز راجہ کا کہا جملہ "دیکھنا میرے منہ پر پھٹکار تو نہیں پڑی”

    مطلب یہ میں (رمیز راجہ) اندر قرآن پر حلف اٹھا کر جھوٹ بول آیا ہوں۔ کہیں میرے منہ پر پھٹکار تو نہیں پڑی ہوئی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >