انگلینڈ کو مالی مشکلات ٹالنے کے لیے پاکستانی مدد درکار

انگلینڈ کو مالی مشکلات ٹالنے کے لیے پاکستانی مدد درکار

تفصیلات کے مطابق کرونا وائرس کے باعث مالی مشکلات کا شکار ہونے والے انگلش کرکٹ بورڈ ای سی بی کو مالی مشکلات ٹالنے کے لیے پاکستانی مدد درکار ہے۔ جس کے لئے گرین شرٹس کے خلاف تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں ایک یا دو مزید ٹیسٹ میچوں کی سیریز شامل کرنے کی تجویز پر غور کیا جارہا ہے۔جس کی مدد سے ای سی بی کو اپنی مالی مشکلات کم کرنے میں مدد ملے گی۔

برطانوی میڈیا کے مطابق ای سی بی اور پی سی پی  کے میڈیکل آفیسرز آپس میں بات چیت جاری رکھے ہوئے ہیں۔ پاکستانی کرکٹ ٹیم سیریز شروع ہونے سے کم از کم تین ہفتے قبل انگلینڈ کے لیے روانہ ہوگی جہاں کرکٹ ٹیم کے 25 رکنی سکواڈ کو 14 دن کے لیے قرنطینہ میں رکھا جائے گا۔ قرنطینہ میں 14 دن قیام کے بعد مہمان کرکٹرز آپس میں وہ میچ بھی کھیلیں گے۔ تاہم 18 مئی کو دونوں کرکٹ بورڈز کے چیف ایگزیکٹیوز میچوں کے انعقاد کے امکانات پر مزید گفتگو کریں گے۔

غیر ملکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق اگر رواں سال انگلش کرکٹ بورڈ پاکستان ویسٹ انڈیز اور آئرلینڈ کی ٹیموں کی میزبانی نہیں کرتا تو ای سی بی کو 380 میلین پاؤنڈ کے نقصان کا خدشہ ہے۔ دوسری طرف کرونا وائرس کے باعث دنیا بھر میں کرکٹ کی سرگرمیاں معطل ہیں۔ جبکہ انگلینڈ میں بھی کرونا وائرس کا پھیلاؤ جاری ہے تاہم کرونا وائرس کے اثرات میں قدرے بہتری دیکھنے میں آ رہی ہے۔

ای سی بی کی کوشش ہے کہ 8جولائی سے بند دروازوں کے پیچھے کرکٹ ایکشن شروع کردیا جائے۔مانچسٹر کے ایمریٹس اولڈٹریفورڈ اور ساؤتھمپٹن ایجز باؤل اسٹیڈیمز میں بائیو سیکیور انتظامات کرتے ہوئے ویسٹ انڈیز اور پاکستان کیخلاف 6ٹیسٹ میچز 3،3 دن کے وقفے سے کرانے کی منصوبہ بندی ہورہی ہے۔ مانچسٹر کے ایمریٹس اولڈٹریفورڈ اور ساؤتھمپٹن ایجز باؤل اسٹیڈیمز کے ساتھ رہائش کے لیے ہوٹلز کے ساتھ ساتھ ٹریننگ سیشن کے لئے گراؤنڈ بھی موجود ہیں۔

سیریز سے قبل کھلاڑی آپس میں وارم اپ میچز بھی کھیلیں گے۔دوسری جانب پاکستان کے 4سے 9جولائی تک نیدر لینڈز میں شیڈول 3ون ڈے میچز تو ملتوی ہوچکے، گرین شرٹس کو آئرلینڈ میں میزبان ٹیم کے ساتھ 12اور 14جولائی کو 2ٹی ٹوئنٹی کھیلنا ہیں۔اس مختصر سیریز پر نظر ثانی کرنے کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔ چیف سلیکٹر اور ہیڈ کوچ مصباح الحق ٹور کے لیے 25 رکنی اسکواڈ کا اعلان جلد کریں گے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >