بابر اعظم کو اپنی انگریزی اور شخصیت میں بہتری لانے کی ضرورت ہے،سابق کرکٹر

تفصیلات کے مطابق سابق کرکٹر تنویر احمد نے ہفتے کے روز اپنے یوٹیوب چینل پر ایک ویڈیو پوسٹ کی جس میں انہوں نے پاکستان کے ٹی ٹوئنٹی اور ون ڈے کے کپتان بابر اعظم کی انگریزی اور شخصیت کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ بابر اعظم کو اب چاہیے کہ وہ اپنی انگریزی اور اپنی شخصیت میں بہتری لانے پر زور دیں۔

انہوں نے کہا کہ بابر اعظم کو اس وقت اپنی انگریزی اور شخصیت میں نکھار لانے کی ضرورت ہے کیونکہ پاکستانی کرکٹ ٹیم کے ٹی ٹوئنٹی اور ون ڈے کپتان ہونے کی حیثیت سے انہیں اکثر میڈیا سے بات چیت کرنے کی ضرورت ہوگی، جو کہ کسی بھی کرکٹ ٹیم کے کپتان کے لیے ضروری چیز ہے۔

اپنے ویڈیو پیغام میں تنویر احمد نے کہا کہ بابر اعظم اپنی شخصیت میں بہتری لانے کی کوشش کریں، شخصیت میں بہتری لانے سے مراد ہے کہ کوئی شخص اپنی ڈریسنگ سینس کو تبدیل کر سکتا ہے، تاہم بابر اعظم کے لیے بھی ضروری ہے کہ وہ اپنی انگریزی میں بہتری لائیں، جب بھی کوئی کپتان بن جاتا ہے ، اسے ٹاس اور میچ کے بعد کی پیش کش کے دوران بات کرنی پڑتی ہے، اس کے علاوہ ، جب وہ مختلف ممالک کے دورے کرتا ہے تو وہ مختلف چینلز پر انٹرویو بھی دے گا۔

لیڈر کو وقت کی پابندی اور منظم ہونے کی ضرورت ہوتی ہے کیونکہ کھلاڑی کپتان کی پیروی کرتے ہیں۔ اسے اپنی فٹنس کی سطح کو بھی برقرار رکھنا چاہئے ، کیونکہ اگر کپتان خود بھی فٹ نہیں ہوتے ہیں تو وہ دوسرے کھلاڑیوں کو بھی ان کی فٹنس میں بہتری لانے کا مشورہ نہیں دے سکتے ہیں۔ دیکھنا یہ ہے کہ بابر ٹیم کی قیادت کس طرح کرتا ہے۔ انہیں ذہنی طور پر مضبوط ہونے کی ضرورت ہے، کیونکہ میڈیا کی جانب سے کپتان کو ہمیشہ تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

اپنے ویڈیو پیغام کے آخر میں 41 سالہ سابق کرکٹر نے بابر اعظم کی پیش رفت پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے ان کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ کپتانی کوئی آسان کام نہیں ہے۔ تاہم ، میں بابر کے لئے خوش ہوں کیونکہ وہ 2015 میں ڈیبیو کرنے کے صرف پانچ سال بعد ہی کپتان بنا ہے، اگر کوئی کھلاڑی اتنے قلیل عرصہ میں کپتان بن جاتا ہے تو پھر اس کے لئے یہ ایک غیر معمولی کامیابی ہے۔

  • bull SHITT …He needs to pay attention on his cricket and confidences ….a English as language is good thing but  Punjabi speaking person can be confident if there are not inferiority complexes …..

  • Spot on. Pakistani players are so ignorant that they can not handle international media. duffer Izamam started that THE BOYS PLAYED WELL. English is an international language and if you are in the field where you need to handle international media then English is must.

    Along with great skills Imran khan had great respect over his communications skills on international level.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >