کامران اکمل کی بھارت کے خلاف ٹیسٹ سنچری دہائی کی بہترین اننگز قرار

وزڈن کرکٹ ویکلی کے پوڈ کاسٹ کے آخری روز ٹیسٹ کی ورلڈ الیون ٹیم کا انتخاب کیا، اس دوران وزڈن کے مینیجنگ ڈائریکٹر بین گارڈنر نے کامران اکمل کو وکٹ کیپر بیٹسمین کے طور پر کامران اکمل کو منتخب کرلیا۔

وزڈن کی ٹیسٹ ورلڈ الیون میں ایڈم گلکرسٹ سب کا مشترکہ انتخاب تھا لیکن بین گارڈنر کا کہنا تھا کہ بھارت کے خلاف 2006 میں 113 رنز کی اننگز بھلائی نہیں جاسکتی، اگر ایڈم گلکرسٹ کی جگہ متاثر نہ ہو تو کامران کو شامل کیا جانا چاہیے۔

کامران اکمل کا بھارت کے خلاف ٹیسٹ ریکارڈ شاندار ہے، انہوں نے 6 میں سے 4 سنچریاں بھارت کے خلاف سکور کیں، 2006 کی پاک بھارت سیریز میں کامران اکمل کی شاندار اننگز کی بدولت پاکستان کو فتح نصیب ہوئی تھی۔

اس میچ میں عرفان پٹھان نے پہلے ہی اوور میں ہیٹ ٹرک کرکے پاکستانی بیٹنگ لائن کی کمر توڑ کے رکھ دی تھی، اگلے 6 کھلاڑی بھی 39 کے مجموعی اسکور پر پولین لوٹ چکے تھے، اس وقت کامران اکمل کریز پر اترے اور اپنے کیریئر کی بہترین اننگر کھیلی۔

ساتویں وکٹ پر کامران اکمل نے ذمہ دارانہ اننگز کھیلتے ہوئے 113 رنز بنائے اور اس میچ میں پاکستان کو فتح نصیب ہوئی، اکمل اور عبدالرزاق نے ساتویں وکٹ پر 115 رنز اور شعیب اختر اور کامران اکمل نے آٹھویں وکٹ پر82 رنز کی شراکتیں جوڑیں جس کے بعد پاکستان کا مجموعی سکور 245 ہوگیا تھا۔

اس میچ میں بھارت پہلے اننگز می 238 رنز بنا سکا ، دوسری اننگز میں پاکستان نے 599 رنز کا ٹارگٹ دیا جس کے بھارت کو با آسانی 341 رنز سے شکست دیدی۔

  • BCCP must be held accountable for NOT protectng assets like asif. These are yung men who ned to be protected from the vultures of international bookies dominated by the indians.

  • He is still the best T20 wicketkeeper batsman in the country. He has proved this in the last 4 years of PSL. He has scored a century in every PSL and has been among the top 5 batsman each time. Not as a whole but is a better wicketkeeper than Sarfraz while facing to spinners. If PCB has any secret files on him linking with fixers then be it but otherwise it will be cruel not to take him to T20 world cup.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >