کورونا کے دوران کرکٹ کی بحالی کیلئے آئی سی سی نے کھلاڑیوں اور آفیشلز کیلیے نئے اصول وضع کر دیے

کورونا وائرس کے بعد کرکٹ کے شائقین اب دوبارہ اس کھیل کی بحالی سے متعلق سوالات اٹھاتے تھے جس کے لیے آئی سی سی نے کچھ حفاظتی اصول وضع کیے ہیں جن کی روشنی میں کرکٹ دوبارہ کھیلا جا سکے گا۔

اس حوالے سے آئی سی سی نے کورونا سے بچاؤ اور کرکٹ کی بحالی کے لیے کچھ باتوں پر عملدرآمد یقینی بنانے کیلئے تمام بورڈزکو ہدایات جاری کی ہیں۔ بچاؤ کے اصولوں پر مبنی اس دستاویز کو ‘بیک ٹو کرکٹ گائیڈ لائنز’ کا نام دیا گیا ہے، جس میں آئی سی سی نے کہا ہے کہ گراؤنڈ میں چیف میڈیکل آفیسر یا بائیو سیفٹی آفیشل کی تعیناتی کو یقینی بنایا جائے جوکہ اس ملک میں کورونا کے حوالے سے بنائے گئے اصولوں پر عملدرآمد کرائے گا یا سماجی فاصلے کے اصول پر عملدرآمد بھی کرائے گا۔

آئی سی سی نے کہا کہ جس بھی ملک کی ٹیم کھیلنے کیلئے جائے گی اس ٹیم کو 14روز کیلئے قرنطینہ کیا جائے تاکہ اس بات کا یقین ہو کہ بھیجی جانے والی ٹیم میں کوئی کھلاڑی کورونا سے متاثرہ نہ ہو۔اس ٹیم کیلئے روزانہ کی بنیاد پر درجہ حرارت کی جانچ اور کورونا ٹیسٹ لازمی قرار دیا جائے۔

میچ آفیشل کھلاڑیوں کے ساتھ کم از کم رابطہ رکھیں گے اور گیند پکڑتے ہوئے گلوز کا استعمال کریں گے۔

دوران میچ کھلاڑی امپائر سے مناسب فاصلہ رکھیں گے اور اپنی ضرورت کی اشیا جیسے دستانے،پیڈ، ٹوپی، تولیہ اورجمپر وغیرہ بھی دوسرے کھلاڑیوں کی چیزوں سے دور رکھیں گے۔

آئی سی سی نے کھلاڑیوں کی میدان میں جیت کی خوشی منانے جیسے گلے ملنے اور ہاتھ ملانے پر بھی پابندی لگائی ہے۔

میچ کے دوران امپائر دستانے استعمال کریں گے اور کھیلنے کے خواہش مند ممالک بڑے دستوں اور زیادہ وسائل کا استعمال کریں گے تاکہ کسی ہنگامی صورتحال میں کھیل متاثر نہ ہو۔

دوسری جانب اتنی دیر تک کھیل سے دور رہنے والے کھلاڑیوں کو دوبارہ کھیلنے پر انجری کا شکار ہونے کابھی خطرہ ہے جس کیلئے آئی سی سی نے کرکٹ بورڈز کو علیحدہ سے ہدایت نامہ جاری کیا ہے۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More