ٹنڈولکر کو 100 ویں سنچری بنانے سے قبل آؤٹ کرنے پر مجھے جان سے مارنے کی دھمکیاں ملیں،ٹم برسنن

 ٹنڈولکر کو 100 ویں سنچری بنانے سے قبل آؤٹ کرنے پر مجھے جان سے مارنے کی دھمکیاں ملیں،ٹم برسنن

انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے آل راؤنڈر ٹم برسنن نے انکشاف کیا ہے کہ بھارتی مایہ ناز بیٹسمین سچن ٹنڈولکر کو 100 ویں سنچری سکور کرنے سے قبل آؤٹ کرنے پر مجھے اور سچن کو آؤٹ قرار دینے والے امپائر روڈ ٹکر کو جان سے مارنے کی دھمکیاں دی گئی تھیں۔

ٹم برسنن نے کہا کہ 2011 میں انگلینڈ اور بھارت کے درمیان 4 ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے آخری میچ کے دوران سچن ٹنڈولکر اپنی 100 ویں سنچری مکمل کرنے کے بالکل قریب تھے مگر امپائر روڈ ٹکر نے میری ایک اپیل پر غلط فیصلہ دیتے ہوئےسچن کو 80 کے انفرادی سکور پر آؤٹ قرار دیدیا۔

 

ٹم برسنن نے کہا کہ اس میچ میں ریفرل سسٹم نہیں تھا کیونکہ بھارتی کرکٹ بورڈ اس کے حق میں نہیں تھا، میری گیند لیگ سائیڈ پر جارہی تھی، مگر اپیل کرنے پر امپائر روڈ ٹکر نے سچن کو آؤٹ قرار دیدیا، سچن یقینا اس میچ میں سنچری سکور کرکے اپنے کیرئیر کی 100 سنچریاں مکمل کرتے مگر وہ آؤٹ ہوگئے اور ہم وہ سیریز جیت کر دنیا کی نمبر 1 ٹیسٹ ٹیم بن گئے۔

اس واقعے کے بعد باؤلر ٹم برسنن اور امپائر روڈ ٹکر کو کافی عرصے تک بھارتی کرکٹ شائقین کی جانب سے غم و غصہ سہنا پڑا،جس میں سوشل میڈیا پر نفرت آمیز پیغاما ت سمیت جان سے مارنے کی دھمکیوں پر مشتمل خطوط بھی شامل تھے۔

ٹم برسنن نے کہا کہ” ہم دونوں کو عرصے تک جان سے مارنے کی دھمکیاں ملتی رہیں، یہ دھمکیاں ہمیں ٹویٹر اور خطوط کے ذریعے ملیں جس میں ہمارے گھروں کے ایڈریسز سمیت بہت سی معلومات موجود ہوتی تھی، خطوط میں امپائر سے کہا جاتا تھا تماری جرات کیسے ہوئے سچن کو آؤٹ قرار دینے کی، جبکہ وہ آؤٹ نہیں تھے "۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ میں کچھ عرصے قبل روڈ ٹکر سے ملا تو انہوں نے مجھ سے کہا میں کوئی سکیورٹی گارڈ رکھنے ے متعلق سوچ رہا ہوں، اس کے بعد انہوں نے آسٹریلیا میں کافی عرصے تک پولیس پروٹیکشن بھی لے رکھی تھی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >