مفادات کے ٹکراؤ کا شبہ،ویرات کوہلی کے خلاف تحقیقات شروع

ایک ریاست کی ایسوسی ایشن کے رکن کی بی سی سی آئی کو درخواست پر مفادات کے ممکنہ ٹکراؤ کے خدشے پر دو کاروباروں میں شمولیت پر ویرات کوہلی کو تحقیقات کا سامنا ہے۔

بھارتی کرکٹ بورڈ (بی سی سی آئی) کے اخلاقیات کنڈکٹ کے افسر ڈی کے جین نے میڈیا کو بتایا کہ وہ ایک اسٹیٹ ایسوسی ایشن کے رکن جانب سے ویرات کوہلی کیخلاف شکایت کی جانچ پڑتال کریں گے۔

مدھیہ پردیش کرکٹ ایسوسی ایشن کے رکن سنجیو گپتا کی جانب سے الزام عائد کیا گیا ہے کہ بھارتی کپتان ویرات کوہلی کے عہدے ملکی کرکٹ بورڈ کے قوانین کی خلاف ورزی ہیں، جن کے مطابق کوئی فرد ایک سے زائد عہدے نہیں رکھ سکتا۔

بی سی سی آئی کے افسر ڈی کے جین نے مزید کہا کہ مجھے ایک شکایت ملی ہے، اس کا جائزہ لینے کے بعد طے کروں گا یہ کیس بنتا ہے یا نہیں، اگر کیس بنا تو پھر ویرات کوہلی کو جواب دینے کے لیے طلب کیا جائے گا۔

مدھیہ پردیش کرکٹ ایسوسی ایشن کے رکن سنجیو گپتا نے دعویٰ کیا ہے کہ بھارتی کپتان ’’ویرات کوہلی سپورٹس‘‘ اور ’’کارنر اسٹون وینچر پارٹنرز‘‘ کے علاوہ ٹیلنٹ ایجنسی ’’کارنر اسٹون سپورٹ اینڈ انٹرٹینمنٹ پرائیویٹ لمیٹڈ‘‘ کے بھی ڈائریکٹر ہیں۔

یہ ایجنسی بھارتی کرکٹرز کی برانڈنگ اور کمرشل مفادات کے معاہدے کرتی ہے۔ بھارتی خبر رساں ادارے کے مطابق سنجیو گپتا اس سے قبل سچن ٹنڈولکر، وی وی ایکس لکشمن اور راہول ڈریوڈ کیخلاف بھی ایسی ہی شکایات درج کرا چکے ہیں۔

ان تینوں کھلاڑیوں کو بورڈ نے نوٹس جاری کئے تھے، لیکن آخر میں تینوں کو کلیئر کردیا گیا۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ اب کی بار بی سی سی آئی ویرات کوہلی کے معاملے پر کس طرح رد عمل دیتا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >