کارگل جنگ کے موقع پر میں نے پونے دو لاکھ پاؤنڈ کا معاہدہ چھوڑ دیا، شعیب اختر

راولپنڈی ایکسپریس شعیب اختر نے بھارت سےتعلقات اور جنگ سے متعلق انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ کارگل واقعے کے وقت میں نے کاؤنٹی کرکٹ میں پونے دو لاکھ پاؤنڈ کے معاہدے کو ٹھکرادیا تھا۔

اے آر وائی نیوز کے ایک پروگرام میں میزبان وسیم بادامی کے معصومانہ سوالوں کا جواب دیتے ہوئے شعیب اختر نے کہا کہ کسی کو میری حب الوطنی پرشک نہیں ہونا چاہیے، یہ بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ کارگل وار کے دوران میرا پونے دو لاکھ پاؤنڈ اور 2002 میں اس سے بھی مہنگا معاہدہ ہوا ناٹنگھم شائر کے ساتھ  ہوا میں یہ دونوں معاہدے چھوڑ کے آگیا تھا کیونکہ کارگل کی وجہ سے ملک میں جنگ کا ماحول تھا۔

دنیا کے تیز ترین باؤلر شعیب اختر نے مزید کہا کہ میں لاہور کے سرحدی علاقے پر کھڑا تھا، پاک فوج کے ایک جنرل نے مجھ سے پوچھا کہ تم یہاں کیا کررہے ہو میں نے کہا جنگ ہونے والی ہے مریں گے تو ساتھ ہی مریں گےایسی کی تیسی دیکھ لیں گے، میں دو بار کاؤنٹی چھوڑ کریہاں بھارت کے خلاف جنگ لڑنے پہنچ گیا تھا۔

شعیب اختر نے مزید کہا کہ جب گزشتہ برس بھارت کے جہازوں نے پاکستانی حدود میں 5 درختوں کو نشانہ بنایا میں ساری رات پریشان رہا میری بیوی نے ہاتھ جوڑ جوڑ کر کہا کہ کچھ نہیں ہوا ہے آپ پرسکون ہوجائیں مگر میں کبھی کسی سے لڑوں کبھی کس طرف جاکر سر ماروں جب تک پاکستانی جانبازوں نے بھارت سے بدلہ نہیں لے لیا تب تک میں مجھے سکون نہیں ملا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >