بال ٹیمپرنگ کے لئے ہینڈ سینیٹائزر کا استعمال، باؤلر معطل

بال ٹیمپرنگ کے لئے ہینڈ سینیٹائزر کا استعمال، باؤلر معطل

کرونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر بال کو چمکانے کے لئے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی جانب سے تھوک کا استعمال ممنوع قرار دیا گیا ہے، لہذا باؤلرز کی جانب سے گیند کو چمکانے کے لیے مختلف طریقے ڈھونڈ کے جا رہے ہیں، ان میں سسیکس کے میچل کلیڈن بھی شامل ہیں، جنہیں بال کو ٹیمپر کرنے کے لئے ہینڈ سینیٹائزر کا استعمال کرنے کے جرم میں معطل کر دیا گیا ہے۔

37 سالہ رائٹ آرم میڈیم پیسر میچل کلیڈن آسٹریلیا میں پیدا ہوئے ہے، جن پر الزام ہے کہ انھوں نے گذشتہ ماہ مڈل سیکس سے میچ کے دوران ہینڈ سینیٹائزر کا استعمال کیا ہے اور اسی وجہ سے وہ تین وکٹیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے تھے، انہیں ہینڈ سینیٹائزر کا استعمال کرکے بال ٹیمپرنگ کرنے کے جرم میں معطل کر دیا گیا ہے۔

سسیکس کی جانب سے اعلامیہ جاری کیا گیا ہے جس میں انہوں نے کہا کہ انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے علاوہ ای سی بی نے میچل کلیڈن کی جانب سے مڈل سیکس سے میچ میں گیند پر سینیٹائزر لگانے کے الزام کی تحقیقات شروع کردی ہیں، تحقیقات کا نتیجہ سامنے آنے تک ہم نے باؤلر کو معطل کر دیا ہے اور مزید اس حوالے سے کوئی بھی تبصرہ کرنا قبل از وقت ہوگا۔

خیال رہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے گیند کو چمکانے کے لئے تھوک کے استعمال پر پابندی عائد کرتے ہوئے باؤلرز کو پسینے کے استعمال کی اجازت دی تھی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >