آئی پی ایل گورننگ کونسل کے ممبر سریندر کھنہ پاکستانی کھلاڑیوں کے مداح نکلے

آئی پی ایل گورننگ کونسل کے ممبر سریندر کھنہ نے پاکستانی کھلاڑیوں کے مداح نکلے

سابق بھارتی کرکٹر سریندر کھنہ نے کہا کہ پاکستانی کھلاڑیوں کی آئی پی ایل میں شرکت نہ صرف کھلاڑیوں بلکہ دونوں طرف سے شائقین کی جانب سے بھی قابل ستائش ہو گی۔

سریندر کھنہ خود بھی آئی پی ایل ( انڈین کرکٹ لیگ) کی گورننگ کونسل کے ممبر ہیں انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت سے منظوری لیے بغیر پاکستانی کھلاڑیوں کو ٹورنامنٹ میں نہیں کھلایا جا سکتا مگر ساتھ ہی انہوں نے بابر اعظم اور شاہین آفریدی کی جم کر تعریف کی۔

انہوں نے کہا کہ جہاں تک پاکستانی کھلاڑیوں کی بھارتی ٹورنامنٹ میں شرکت کی بات ہے تو یہ ہمارے اختیار میں نہیں ہے کیونکہ ہم حکومتی ایڈوائزری کے ماتحت ہیں وگرنہ دونوں جانب سے کھلاڑی ایک دوسرے کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہیں اور ویسے بھی کون نہیں چاہے گا کہ بابر اعظم آئی پی ایل میں کھیلیں یا ایسا کون شخص ہے جو شاہین آفریدی کو آئی پی ایل میں بالنگ کراتے ہوئے نہیں دیکھنا چاہے گا؟

سابق بھارتی وکٹ کیپر اور بیٹسمین سریندر کھنہ نے بابر اعظم کو ویرات کوہلی کے برابر کا کھلاڑی قرار دیا۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ بابر اعظم کے بھارت میں بھی مداح ہیں اور اپنی تکنیک کو مدنظر رکھتے ہوئے وہ کوہلی کے برابر ہیں۔ اب یہ مستقل مزاجی کی بات ہے ، جیسا کہ کوہلی پچھلے 10 سے 12 سالوں سے کر رہے ہیں اگر بابر بھی اسی طرح کھیلتے رہے تو وہ ایک منجھے ہوئے کرکٹر کی حیثیت سے سامنے آئیں گے۔

انہوں نے انگلینڈ کے خلاف ٹی20 میں ڈیبیو کرنے والے پاکستانی بلے باز حیدر علی کے حوالے سے بھی کہا کہ وہ بہت اچھا کھیل سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں نے ایک دن دیکھا کہ حیدر علی انتہائی عمدہ طریقے سے انگلینڈ کے خلاف کھیل رہے تھے اور وہ اپنی تکنیک میں بہت ماہر لگ رہے تھے۔

سریندر کھنہ نے کہا کہ اگر تعلقات بہتر ہوں تو آئی پی ایل اور پاکستان سپر لیگ کی چیمپئن ٹیموں کے مابین بھی میچ کرائے جانے چاہیئں۔ انہوں نے کہا کہ یہ نا ممکنات میں سے ہے مگر ساری دنیا کے کرکٹ شائقین ان دونوں ٹورنامنٹس کی چیمپئن ٹیموں کو مد مقابل دیکھنا چاہیں گے۔

  • For God Sake PCB and Pakistani player don’t go in the trap of IPL or BCCI. Now in few months in will show willingness to pay with Pakistan or allow Pakistani players to play IPL. Please don’t play with Indians. Just NO to cricket with India.

    You will see Indian efforts for moralization relations with Pakistan, just say F*ck of India.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >