فواد عالم ہم شرمندہ ہیں !

عامر عثمان عادل

فواد عالم ہم شرمندہ ہیں ! جنوبی افریقہ کی کرکٹ ٹیم پاکستان پہنچی تو یہ ایک تاریخی لمحہ تھا جب 11 سال بعد کرکٹ کے میدان آباد ہونے جا رہے تھے ۔ 2009 میں لاہور میں سری لنکن کرکٹ ٹیم پر حملے کی صورت ایک گھناؤنی سازش کے ذریعے ہم پر بین الاقوامی کرکٹ کے دروازے بند کر کے کھیل کے میدان ویران کر دیئے گئے

کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں کھیلے جانے والے ٹیسٹ میچ کا دوسرا روز تھا ۔ پاکستانی ٹیم کا آغاز کچھ اچھا نہ تھا محض 33 رنز پر 4 کھلاڑی پویلین لوٹ چکے تھے ، ایسے میں ایک بلے باز جنوبی افریقہ کے باؤلرز کے سامنے سیسہ پلائی دیوار بن کر کھڑا ہو گیا ،اسے بھی 11 سال انتظار کرنا پڑا اپنی پرفارمنس دکھانے کی خاطر یہ اس کے کیرئیر کا 8 واں ٹیسٹ میچ تھا، لیکن اب اس کی عمر ڈھلتے ڈھلتے 35 کے ھندسے کو چھو چکی تھی 11 سال ٹیسٹ میچ کھیلنے سے محروم اس کھلاڑی نے اپنے دلکش سڑوکس سے شائقین کے دل موہ لئے ، اپنے کیرئیر کی بہترین اننگز کھیلتے ہوئے اس کا سکور 94 پہ جا پہنچا  اگلی گیند پہ کچھ بھی ممکن تھا ،نروس نائنٹی کا شکار ہو کر سینچری کا خواب چکنا چور ہو جاتا

خیر باولر نے سٹارٹ لیا ادھر اس کا بازو گھوما ادھر بلا اور ایک جاندار سڑوک سے گیند باؤنڈری لائن سے باہر جا گری ،ایک بلے باز کا اعزاز تھا کہ چھکا لگا کر سینچری کا سنگ میل عبور کر لیا، یہ لمحہ اس کھلاڑی کے لیے تاریخ میں امر ہو گیا جسے 11 سال کھیل کے میدانوں سے دانستہ طور پر دور رکھا گیا ، آئیں ایک نظر اس کے کیرئیر کو دیکھتے ہیں 17 سال کی عمر میں اس نے فرسٹ کلاس کیرئیر کا آغاز کیا

کارکردگی کی بنا پر انڈر 19 ورلڈ کپ سکواڈ کا حصہ بنا 2006 _7 اس کے کیرئیر کا ٹرننگ پوائنٹ ثابت ہوا جب قائد اعظم ٹرافی میں اس نے رنز کے انبار لگا دئیے اس کے بعد T 20 سیریز میں اس نے متعدد اعزاز اپنے نام کر لئے جن میں فائنل کا مین آف دی میچ، مین آف سیریز بیسٹ باولر، بیٹسمین یہی قرار دیا گیا  ، اس شاندار کارکردگی نے اس پر قومی کرکٹ ٹیم کے دروازے کھول دیئے

اس کارکردگی نے نوجوان کرکٹر پر قومی ٹیم کے دروازے کھول دیئے اور اسے ابو ظہبی میں جاری ون ڈے سیریز کا حصہ بنا لیا گیا 2009 میں اسے ٹیسٹ کیپ عطا کی گئی اور سری لنکا کے خلاف میچ کی دوسری اننگز میں اس نے شاندار سینچری سکور کر کے دنیا کی توجہ حاصل کر لی 168 رنز کی دھواں دار اننگز اس کے ٹیسٹ کیرئیر کا خوبصورت آغاز تھا ، لیکن اس کے بعد وہی پسند نا پسند کا مکروہ کھیل شروع ہوا دو میچ کھیلنے کے بعد اسے ڈراپ کر دیا گیا

2010 میں جنوبی افریقہ کے خلاف ون ڈے سیریز میں اس پر دوبارہ مہربانی کرتے ہوئے ٹیم میں شامل کر لیا گیا ایک بار پھر اس نے 59 اور 48 رنز بنا کر کارکردگی ثابت کر دی ، لیکن یہ کارکردگی سلیکٹرز کو مطمعن کرنے کو ناکافی تھی اسے 2011 کے ورلڈ کپ سکواڈ کا حصہ نہ بنایا گیا

اب 4 سال بعد ایک بار پھر قسمت اس پر مہربان ہوئ اور 2014 کی ون ڈے سیریز میں اسے ایک بار پھر ٹیم میں شامل کیا گیا
ایشیا کپ بنگلہ دیش میں کھیلا جا رہا تھا پہلے دو میچوں میں اسے موقع نہ دیا گیا میزبان ٹیم کے خلاف اس نے 74 رنز کی میچ وننگ اننگز کھیلی اور پھر فائنل میں ایک دلکش سینچری سکور کر کے نہ صرف دنیائے کرکٹ کے دیوانوں سے داد وصول کی بلکہ یہ ثابت کر دیا کہ اسے متواتر کھلایا جائے تو وہ کمال دکھا سکتا ہے

اب 11 سال بعد اس کھلاڑی کو ٹیسٹ میچ میں واپس لیا گیا تو پہلے ہی میچ میں اس نے انتہائ ذمہ دارانہ اننگز کھیلتے ہوئے اپنی دلکش سویپ شاٹ اور سڑوکس سے شائقین کرکٹ کو جھومنے پر مجبور کر دیا  ،اس کی یہ سینچری اس قدر شاندار تھی کہ ویسٹ انڈیز کے شہرہ آفاق کرکٹر ایان بشپ بے ساختہ کہہ اٹھے

جب بھی اسے کھیلتے ہوئے دیکھتا ہوں میرا دل خوشی سے جھوم اٹھتا ہے ہم اس کے دس سال تو واپس نہیں لا سکتے لیکن اس کے ساتھ مل کر شاندار اننگز کا جشن منا سکتے ہیں well played

جی تو پیارے پڑھنے والو

بات ہو رہی ہے فواد عالم کی جسے اپنی کارکردگی دکھانے کے لئے دس سال انتظار کرنا پڑا ، اور اب جبکہ وہ 35 برس کا ہو چکا ہے پہلے سی توانائی اسٹیمنا ماند پڑتا جا رہا ہے لیکن ایک عشرہ کھیل کے میدانوں سے دوری کے باوجود اس نے پہلے ہی میچ میں جس شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا وہ اس کے ناقدین کے منہ پر طمانچہ تھا

سوچئے جب یہ ٹیم سے ڈراپ کیا گیا تب اس کی عمر 25 برس تھی کتنے ریکارڈ تھے جو اب تک یہ بیتے برسوں میں پا کستان کے نام کر چکا ہوتا کتنے سنگ میل عبور کر چکا ہوتا ،دس برس شائقین کرکٹ کو اس کے کھیل کی دلکشی سے محروم رکھا گیا
اس کے ٹیلنٹ کو سلیکٹرز نے انا کی بھینٹ چڑھا دیا ، کون ہے جو اس بے مثال بلے باز کے دس سال واپس لا دے؟

کرکٹ کے ان ناخداوں نے نجانے کتنے ھیرے مٹی میں رول دئیے رزاق جیسا آل راونڈر ہم نے کھو دیا  ،کون ہے جو ان سے فواد عالم کے دس برسوں کا حساب لے سکے ، میرا کپتان ابھی ملکی معیشت کو پاوں پہ کھڑا کرنے میں مصروف ہے ، دم توڑتی کرکٹ کی خبر کون لے گا

فواد عالم ہم شرمندہ ہیں


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >