شاہین آفریدی کا خوشی منانے کا انداز ‘فلائنگ کس’ تنقید کی زد میں

شاہین آفریدی کا خوشی منانے کا انداز 'فلائنگ کس' تنقید کی زد میں

سابق فاسٹ بولر شعیب اختر نے شاہین شاہ آفریدی پر تنقید کرتے ہوئےکہا کہ شاہین آفریدی اتنی وکٹیں نہیں لیتے جتنے ہوائی بوسے اچھالتے ہیں، انھیں گلے لگنے اور اس طرح فلائنگ کس کرنے کےلیے کم سے کم 5 وکٹیں تو لینا چاہئیں۔

تفصیلات کے مطابق انگلینڈ کے خلاف دوسرے ون ڈے میں پاکستان کے فاسٹ بالر شاہین شاہ آفریدی صرف ایک وکٹ حاصل کر سکے لیکن ان کی خوشی منانے کا انداز تنقید کی زد میں آگیا ہے۔

سابق فاسٹ بولر شعیب اختر نے شاہین آفریدی کے فلائنگ کس پر شدید اعتراض کیا ہےاور کہا ہے کہ شاہین آفریدی اتنی وکٹیں نہیں لیتے جتنے ہوائی بوسے اچھالتے ہیں، انھیں گلے لگنے اور اس طرح فلائنگ کس کرنے کیلیے کم سے کم 5 وکٹیں تو لینا چاہئیں، صرف ایک وکٹ حاصل کر کے اس انداز میں خوشی منانے کا کوئی جواز نہیں بنتا۔

شعیب اختر نے کہا ہے کہ اس موجودہ مینجمنٹ اور پی سی بی کو مزید 3 برس کا وقت دیں تو ہماری ٹیم سب سے نیچے پہنچ جائے گی، اس ٹیم میں نہ تو کوئی کھیل کی سمجھ ہے اور نہ ہی فائٹ کرنا جانتی ہے، اگر یہ ٹیم 1996 میں ہوتی تو ملک کی نمائندگی تو دور کی بات ہے کوئی انھیں ’بال پکر‘ تک نہ بناتا۔

شعیب اختر کا مزید کہنا تھا کہ کہتے ہیں کہ ٹیم آپس میں ہم آہنگ نہیں تھی، انگلینڈ کی ٹیم بھی میچ سے صرف ڈھائی روز قبل تشکیل دی گئی تھی مگر وہ آپس میں ہم آہنگ ہوگئے جبکہ 30 روز سے ایک ساتھ رہنے کے باوجود آپ لوگ ہم آہنگ نہیں ہوسکے۔انہوں نے کہا کہ آپ تو انگلینڈ کی اکیڈمی ٹیم سے بھی ہار گئے تھے۔

یاد رہے کہ انگلینڈ کی ٹیم نے بھی پاکستان کو 52 رنز سے شکست دی تھی ، 47 اوورز تک محدود میچ میں گرین شرٹس 248 رنز کا ہدف حاصل نہیں کرپائے تھے۔

  • دُنیا میں سب سے آسان کم تنقید کرنا ہے۔
    شعیب اختر اور ان جیسے تمام کمینٹری کرنے والے سابق کھلاڑیوں کو میں یہ کہتا ہوں کہ پاکستان ڈومیسٹک ٹیموں کی کوچنگ کریں اور وہ کھلاڑی نکال کر دکھائیں جس کا دعوی یہ کرتے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >