سابق بھارتی کرکٹر وریندر سہواگ کا پاکستانی کھلاڑیوں پر الزام

سابق بھارتی کرکٹر وریندر سہواگ کا پاکستانی کھلاڑیوں پر الزام

بھارتی سیاستدان ہوں یا عوام یا پھر ہو کھیل کا میدان، بھارتی پاکستانیوں پر الزامات لگانے سے باز نہیں آتے، اور اب سابق بھارتی اوپنر وریندر سہواگ مردھے گڑھے اکھاڑ کر بیٹھ گئے، وریندر سہواگ کا کہنا ہے کہ ڈیبیو میچ میں پاکستانی کرکٹرز نے میرا گالیوں سے استقبال کیا تھا۔

سابق بھارتی اوپنر وریندر سہواگ نے کہا کہ 1999میں موہالی میں کھیلے جانے والے ون ڈے میں بیٹنگ کیلیے آیا تو شعیب اختر، شاہد آفریدی اور محمد یوسف نے گالیاں دینا شروع کردیں، میں پنجابی جانتا ہوں، اس لیے اندازہ ہوگیا تھا کہ وہ سب کس طرح کے الفاظ استعمال کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا تھا کہ میرا پہلا میچ تھا لہذا نروس ہوگیا اور کریز پر زیادہ دیر تک نہیں رہ سکا،لیکن بعد میں وقت کے ساتھ ساتھ بیٹنگ میں اعتماد بحال ہوتا گیا، ساتھ ہی سہواگ نے بتایا کہ میں پاکستانی بولرز کا بدلہ چکانے میں بھی کامیاب ہوا، ملتان ٹیسٹ میں تو ٹرپل سنچری بنا کر جواب دیا۔

انہوں نے کہا کہ شعیب اختر اور شاہد آفریدی نے ان کے ساتھ بہت زیادتی کی،اس وقت میری عمر 20-21 سال تھی۔ جب میں بیٹنگ کے لیے گیا تو شاہد آفریدی ، شعیب اختر ، یوسف اور دیگر تمام پاکستانی ٹیم کے کھلاڑیوں نے بہت گالیاں دیں،ایسی گالیاں جو زندگی میں پہلی بار سنیں۔

سابق بھارتی اوپنر نے کہا کہ 2004 میں پاکستان کے دورے کے دوران میں نے ٹرپل سنچری اسکور کرکے ان گالیوں کا بدلہ لیا تھا،میں نے جب بھی پاکستان کے خلاف میچ کھیلا خود بخود میرا خون کھولنے لگتا تھا اور اسی وجہ سے میں نے ہمیشہ ان کے خلاف اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور میرا ایوریج اچھا رہا۔

سہواگ نے ٹیسٹ میں پاکستان کے خلاف 1276 رنز 91.14 کی اوسط سے بنائے جس میں چار سنچریاں شامل تھیں، ون ڈے میں انہوں ںے 1071 رنز 34.5 کی اوسط سے بنائے جس میں دو سنچریاں اور چھ نصف سنچریاں شامل تھیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >