کورونا وائرس کے باعث پی ایس ایل فرنچائزرز کا میچز یو اے ای منتقل کرنے کا مطالبہ

کورونا وائرس کے باعث پی ایس ایل فرنچائزرز کا میچز یو اے ای منتقل کرنے کا مطالبہ

کورونا وائرس کی وجہ سے بگڑتی ہوئی صورتحال کے باعث پی ایس ایل فرنچائزرز نے میچز کراچی سے یو اے ای منتقل کرنے کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان میں کرونا وائرس کیسز کی تعداد میں تیزی سے اضافے کے پیش نظر پاکستان سپر لیگ فرنچائزرز نے پی ایس ایل کے باقی میچز کراچی سے متحدہ عرب امارات منتقل کرنے کا مطالبہ کردیا۔

سپورٹس کی ویب سائٹ کرک انفو کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ ہفتے پی ایس ایل میں شامل تمام ٹیموں نے پی سی بی کو ایک خط لکھا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ کراچی کے بجائے میچز متحدہ عرب امارات میں کروانا زیادہ مناسب ہوگا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ ترجمان کا کہنا ہے کہ پی ایس ایل ایونٹ کی کراچی سے یو اے ای منتقلی کی فی الحال کوئی تجویز زیر غور نہیں، کرکٹ بورڈ اعلان شدہ شیڈول کے مطابق تیاریاں کررہا ہے۔

پی ایس ایل فرنچائزرز سمیت سب کی مشاورت سے میچز کے پروگرام کا اعلان کیا جا چکاہے۔ اس میں ابھی تک کسی قسم کی تبدیلی نہیں کی گئی، نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر کی اجازت سے یکم جون سے لیگ کے باقی میچز کرانے کا اعلان کررکھاہے۔

کوویڈ کی موجودہ صورتحال میں پاکستان کرکٹ بورڈ این سی او سی کے ساتھ رابطے میں ہے، اس حوالےسے این سی او سی حکام جو بھی گائیڈ لائنزدیں گے اس پر عمل کرنے کےپابند ہوں گے۔

واضح رہے کہ ملک میں گزشتہ روز کورونا سے مزید 161 افراد جاں بحق ہوگئے تاہم مثبت کیسز کی شرح میں کمی ہوئی ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ روز ملک بھر میں کوویڈ کی تشخیص کے لیے 37 ہزار 587 ٹیسٹ کیے گئے۔ ملک بھر سے کورونا کے مزید 3377 مثبت کیسز سامنے آئے ہیں۔

ملک میں کورونا کے مجموعی مثبت کیسز کی مصدقہ تعداد 8 لاکھ 37 ہزار 523 ہو گئی ہے۔ پنجاب میں 3 لاکھ 8 ہزار 529، سندھ 2 لاکھ 86 ہزار 521، بلوچستان 22 ہزار 664، خیبر پختونخوا ایک لاکھ 20 ہزار 590، اسلام آباد میں 76 ہزار 492، آزاد کشمیر 17 ہزار 379 اور گلگت بلتستان میں 5 ہزار 330 افراد کورونا سے متاثر ہوچکے ہیں۔

گزشتہ روز ملک میں کورونا کے مزید 5 ہزار 18 مریض کورونا سے صحتیاب ہوئے ہیں۔ اس طرح اس وبا سے چھٹکارا پانے والے افراد کی تعداد 7 لاکھ 33 ہزار 62 ہوگئی ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>