گردشی قرضے : احسن اقبال کو حکومتی وزراء کا جواب


گزشتہ روز ایکسپریس ٹریبیون کے رپورٹر شہباز رانا نے ایک سٹوری چھاپی جس میں ایشیائی ترقیاتی بنک کے حوالے سے دعویٰ کیا کہ ہر ماہ گردشی قرضوں میں 21 ارب روپے کا اضافہ ہورہا ہے

اس خبر کو لیکر احسن اقبال نے طنزیہ ٹویٹ کیا کہ گھبرانا نہیں آپ نے کپتان پوری تباہی کرکے جائے گا

https://twitter.com/betterpakistan/status/1203706004908716032


جس پر وفاقی وزیر حماد اظہر سامنے آگئے اور احسن اقبال کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ نون لیگ کے دور میں گردشی قرضے 38 ارب ماہانہ کی رفتار سے بڑھ رہے تھے۔ اُس وقت پوری سے بھی ذیادہ تباہی تھی؟ بجٹ سبسڈی کی فراہمی کے بعد یہ رقم اب 21 بھی نہیں بلکہ 12 ارب ہے۔

https://twitter.com/Hammad_Azhar/status/1203732412036976640


اس پر وفاقی وزیر توانائی عمرایوب خان نے بھی جواب دیا اور کہا کہ  پہلی سہ ماہی کے دوران گردشی قرضہ 77ارب روپے تھا،یہ اعدادوشمار بجٹ میں سبسڈی کی ادائیگی سے پہلے کے ہیں۔39ارب روپے بجٹ کے ذریعے ادا کردیئے گئے ،جبکہ 38ارب روپے مجموعی گردشی قرضے کے ہیں،اس طرح ماہانہ بنیادوں پر یہ تقریباً بارہ ارب روپے بنتے ہیں۔

 


عمر ایوب نے مزید کہا کہ  ایک اخبار میں شائع ہونے والی خبر میں دیئے گئے اعدادشماراگست کے ہیں جوسبسڈی کی ادائیگی سے پہلے کے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ٹی ایس ڈی سبسڈی تمام ڈسکوز کےلیے یکساں ٹیرف ،300یونٹ تک بجلی استعمال کرنے والے صارفین اورزرعی ٹیوب ویلوں کو رعایتی بجلی فراہم کرنے کے لیے ہے۔

 


عمرایوب خان کا کہنا تھا کہ خبر کے مطابق ایشیائی ترقیاتی بینک نے اعتراف کیا ہے کہ گردشی قرضے میں نمایاں کمی آئی ہے جوحکومتی دعوے کی تصدیق ہے۔

 


واضح رہے کہ جب ن لیگ کی حکومت گئی تو گردشی قرضوں میں 1200 ارب روپے سے زائد کا اضافہ ہوچکا تھا ۔ احسن اقبال طنز کرتے ہوئے یہ بھول گئے کہ انکی حکومت نے گردشی قرضوں کے معاملے پر کیا کیا؟ جب مئی 2013 میں  ن لیگ کی حکومت آئی تو گردشی قرضہ  480 ارب روپے تھا جسے کچھ ہی ماہ بعد اتار دیا گیا لیکن اسکے بعد باقی چار سالوں میں گردشی قرضہ 1200 ارب روپے سے زائد ہوگیا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>