بیوروکریسی اپنا رویہ بدلے،وزیراعظم کو شکایتی خط لکھنے پر فواد چودھری کی تنقید

بیوروکریسی اپنا رویہ بدلے،وزیراعظم کو شکایتی خط لکھنے پر فواد چودھری کی تنقید

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ عام لوگوں کے ساتھ ہماری بیوروکریسی کا سلوک قطعی طور پر قابل رشک نہیں، یہ عموعی شکایت ہے اور سفارتخانے بھی اس سے مبرا نہیں۔

تفصیلات کے مطابق فواد چوہدری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ کسی بھی شعبے کی طرح سفارتخانوں میں بہت اچھے آفیسرز ہیں لیکن داستانیں لکھی جا سکتی ہیں جو سابق ادوار میں پاکستانیوں کے ساتھ سلوک رواء رکھا جاتا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان کو کریڈٹ جاتا ہے انھوں نے عام مزدور کا دکھ محسوس کیا اور آج پاکستان کے سفارتخانے اپنے مزدوروں اور عام شہریوں کو جوابدہ ہیں۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ وہ چند سابق بیوروکریٹس کے وزیراعظم کو لکھے گئے خط پر حیران ہیں، تحریک انصاف بیرون ملک پاکستانیوں خصوصاً مزدوروں کے ساتھ ہرحال میں کھڑی ہوگی، رویوں کو بدلنےکی ضرورت ہے، عام لوگوں کے ساتھ ہماری بیوروکریسی کا سلوک قطعی طور پر قابل رشک نہیں یہ عموعی شکایت ہے اور سفارتخانے بھی اس سے مبرا نہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل سفیروں کی ایسوسی ایشن کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کو ایک شکایتی خط لکھا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ سفیروں پر  بغیر تحقیقات تنقید ناقابل فہم ہے، خامیوں کی تصحیح کرنی چاہیے ناکہ عوامی سطح پر سرزنش کی جائے۔

وزیراعظم کو لکھے گئے خط میں مزید کہا گیا ہے کہ تحقیقات کے بغیر  پورے ادارے کو مورد الزام ٹھہرانا سمجھ سے بالاتر ہے۔

خط کے متن کے مطابق وزارت خارجہ کے صرف 320 افسران 120 سفارت خانوں میں کام کر رہے ہیں، اتنی کم افرادی قوت کے ساتھ سفارت خانے بہترین کام کر رہے ہیں۔

 

    • اچھا خیال ہے پر بھائی صاحب یہ ٹائیگر ہیں تو پی ٹی آئی کے ہیں لیکن slipپاکستانی پہلے ہیں۔ کہیں
      نہ ہو جائیں۔

  • Embassies are full of most incompetent and corrupt people!! They donor help poor people!if anyone faces a small issue , no one will try to solve it! The queue outside Pakistani embassy is longest and it’s often out side the gate of embassy!! There is no seating arrangement! And somehow we feel that people in embassy hate us! And if you belong to affluent section of society, they try to be chummy and overly nice! In either case professionalism is lacking!!

  • جن حراموں بابوں نے خط لکھا ہے ان حرامیوں کے نام بھی تومعلوم ہونا چاہئے
    جن حرامیوں کو اوور سیز پاکستانیوں کی دیکھ بھال اور جائیز دفتری ضرورتوں کے واسطے سفارتخانوں میں بھیجا گیا ہے اگر ان حرام زادوں کوزیادہ تکلیف ہے تو ان کو استعفئی دے کر گھر بیٹھنا چاہئے حرام خوروفراڈیو سول سرونٹ ہو تو سرو کرو رول نہیں


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >