گلگت بلتستان:حق و باطل کے فیصلے کیلئے 2 مذہبی فرقوں کے علماء آگ میں کودیں گے

 

پاکستان کے صوبے گلگت بلتستان میں 2 مذہبی فرقوں میں حق و باطل کے فیصلے کیلئے آگ میں کودنے کیلئے مباہلہ چیلنج طے پایا ہے۔

خبررساں  ادارے کی رپورٹ کے مطابق  گلگت بلتستان میں شیعہ سنی کشیدگی ایک بار پھر عروج کو پہنچ چکی ہے ، دونوں فرقوں کی جانب سے حق و سچ پر ہونے کے دعوے بھی جاری ہیں اور مخالفین پر تنقید بھی، ایسے میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ کیوں نہ حق و باطل کی اس جنگ کو مباہلہ کے ذریعے ہمیشہ کیلئے حل کرلیا جائے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق 21 مئی بروز جمعہ کو دوپہر تین بجے مباہلہ منعقد کیا جائے گا جس میں سنی مسلک کی طرف سے مولانا قاضی نثار احمد جبکہ  آغا راحت حسین حسینی شیعہ مسلک کی نمائندگی کرتے ہوئےایک ساتھ آگ میں چھلانگ لگائیں گے۔

اس مقابلے میں جو زندہ رہے گا اسے حق پر تسلیم کیا جائے گا اور جو آگ میں جھلس کر جاں بحق ہوگیا اسے  فی النار تصور کیا جائےگا۔

گزشتہ روز  سنی فرقے کی نمائندہ اہل سنت و الجماعت گلگت بلتستان نے ایک اعلامیہ جاری کیا ہے جس میں  کہا گیا کہ  ایک مذہبی فرقے کی جانب سے امن و امان کو خراب کرنے اور صحابہ کرام کی توہین کے جواب میں  آئینی و جمہوری کردار ادا  کرنے کا عہد کرتے ہیں اور مناظرے اور مباہلے کے چیلنج کو قبول کرکے اس کیلئے مقام و وقت کے تعین کا مطالبہ بھی کرتے ہیں۔

گلگت بلتستان:حق و باطل کے فیصلے کیلئے 2 مذہبی فرقوں کے علماء آگ میں کودیں گے

اس اعلامیہ کے جواب میں شیعہ مسلک کی نمائندہ جماعت  مرکزی امامیہ کونسل گلگت بلتستان  کی جانب سے  مرکزی جامع مسجد اہل سنت کے خطیب کو خط لکھا گیا۔ جس میں چیلنج قبول کرنے پر خوشی کا ا ظہار کرتے ہوئے لکھا گیا کہ ماضی میں ہونے والے متعدد مناظرے بنا کسی نتیجہ کے ختم ہوئے لہذا اس بار مباہلے کا چیلنج دیا گیا تاہم حق کا بول بالا ہو اور فساد کا ہمیشہ کیلئے خاتمہ ہو۔

گلگت بلتستان:حق و باطل کے فیصلے کیلئے 2 مذہبی فرقوں کے علماء آگ میں کودیں گے

مرکزی امامیہ کونسل کے لکھے گئے خط و اعلامیہ کی کاپیاں گلگت بلتستان کی حکومت و انتظامی افسران کو بھی ارسال کی گئی ہیں، گلگت بلتستان حکومت کے اس سارے معاملے میں ملوث ہونے کی افواہوں کی تردید کرتے ہوئے ترجمان گلگت بلتستان حکومت علی تاج کا کہنا ہے کہ حکومت کا اس سارے معاملے سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

  • ایک تیر سے تین شکار کرو. اهل سنت میں دو بندی، بریلوی اور اهل حدیث جو کہ ایک دوسرے کو کافر کہتے ہیں، ان کو بھی بلاؤ اور ان چار مولویوں میں سے جو مولوی آگ میں جلنے سے بچ جائے اسکا فرقہ حق پر ہوگا

  • Mobahla doesn’t state what will happen if Moulvis of both sects got burnt. If that happened, both will land in Jahannam for committing suicide. It’s not necessary that one Moulvi gets burnt and other remains alive in a Mobahla.

  • Topi drama… none of them will do it , it is all point scoring, on the day, there might be some police or administration or even the followers who will stop these Mullahs and they will keep ranting that they were ready but others/admin did not allow them…

  • ٹوپی ڈرامہ۔۔۔۔۔۔
    دونوں کو سیدنا ابراہیم علیہ السلام بننے کا شوق چڑھا ہے۔ خوش فہمی میں ہیں کہ یہ آگ بھی گلزار بن جاے گی۔۔۔۔۔یہ
    اپنی لگای آگ میں ہی جل جائیں گے۔
    کسی بھی وقت صلح نامے کی کاپی
    پوسٹ کر دیں گے یہ دونوں حضرات۔۔۔۔۔

  • اگر دونوں مرگئے جو کہ طے اگر یہ کودے تو دونوں ہی مریں گیے
    پھر کیا اگلا راؤنڈ قادیانی اور اہلُحدیث کا ہوگا ان دونوں کے مرنے کے بعد پھر ایکُ دیوبندی ایک بریلوی مرجائیں گے پھر لاہوریُ فضلو ڈیزلئ انکے مرنے کے بعدپھر کیا غیر مسلموں کو حق پر تسلیم کیا جائے گا پھر ان میںُ کافروں یا اہل کتاب ؟

  • یہ دونوں ملاں اکٹھے آگ میں چھلانگ لگائیں اور مجھے امید ہے دونوں ہی اس آگ میں بھسم ہو جائیں گے اور پھر دوزخ ان دونوں کا مقام ہوگا۔ انشااللہ۔ میرے خیال میں یہ جہالت ہے کہ اس قسم کا مباہلہ کیا جائے۔ ہر ایک انسان،مسلمان اپنے اپنے عقیدے پر عمل کرتا جائے فیصلہ اللہ پر چھوڑے، اور کوئی فرقہ دوسرے فرقے کو کافر نہ کہے یہی اسکا حل ہے۔ یورپیئن وغیرہ ان میں بھی ہزاروں فرقے ہیں کبھی نہیں لڑتے اور جنگ میں ساتھ ہو کر لڑتے ہیں۔تمہیں منافرت کی
    ۔بیماری ہے اسکو دور کرواگر دنیا میں

  • Why not ALL the movlies / Ulamas of both the sects take part in this contest? Why just only 1 from both side?
    If possible please someone send my request to all the molvies and ulamas of both sects.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >