بجلی کے بلوں میں فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کیا ریلیف ملنے والا ہے؟

بجلی کے بلوں میں فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کیا ریلیف ملنے والا ہے؟

واپڈا کی ڈسٹری بیوشن کمپنیز کیلئے ماہانہ فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں 29 پیسے فی یونٹ کمی کو منظور کرتے ہوئے چیئرمین نیپرا توصیف ایچ فاروقی نے کہا کہ ایف ایس آر یو کے ڈرائی ڈاکنگ کے دوران ایل این جی ٹرمینل کی بندش اور بجلی کی پیداوار کے لیے متبادل مہنگے فیول کے استعمال سے متعلق ریگولیٹر کو اعتماد میں نہیں لیا گیا۔

سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی نے نیپرا سے درخواست کی تھی کہ مئی 2021 میں ایف سی اے میکانزم کے تحت صارفین کو زیادہ سے زیادہ 12 پیسے فی یونٹ کی واپسی کی اجازت دی جائے۔ تاہم نیپرا نے نشاندہی کی کہ فی یونٹ فیول چارج 5.6734 روپے فی یونٹ کے مقابلے میں ریفرنس فیول چارج 5.9322 روپے فی یونٹ تھا جو 26 پیسے کا فرق ہے۔

جس کی وجہ سے 35 کروڑ 42 لاکھ 90 ہزار روپے یا فی یونٹ تقریباً 3 پیسے، اضافی بوجھ پڑا۔ اب جولائی کے بلوں میں نیپرا نے 29 پیسے فی یونٹ کمی کی ہے جس سے مجموعی طور پر 3 ارب 60 کروڑ روپے کا مالی اثر پڑتا ہے۔

مگرصارفین کو عملی طور پر صرف ایک ارب 80 کروڑ روپے کی واپسی کی جائے گی کیونکہ اس کمی کو 300 یونٹ سے کم استعمال والے اور زرعی صارفین کو اس سے فائدہ اٹھانے کی اجازت نہیں دی جائے گی کیونکہ وہ پہلے ہی سبسڈی سے فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

نیپرا کے مطابق جولائی کے مہینے میں آنے والے بجلی کے بلوں میں صارفین کے بلوں میں فیول کی کم لاگت کو ایڈجسٹ کیا جائے گا۔ یاد رہے کہ ان نرخوں کا اطلاق کے الیکٹرک صارفین پر نہیں ہوگا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>